حدبندی کمیشن سے دور رہنے کا فیصلہ

سرینگر//نیشنل کانفرنس کے منحرف رہنماآغاروح اللہ نے جموں کشمیرحدبندی کمیشن کے کام کاج سے خود کوالگ رکھنے کیلئے پیپلزڈیموکریٹک پارٹی کی ستائش کرتے ہوئے کہا ،’’ اپنے حقوق کیلئے کھڑاہونے کیلئے کبھی بہت دیر نہیں ہوئی ہوتی ہے۔‘‘کمیشن کے نام ایک مکتوب میں پیپلزڈیموکریٹک پارٹی نے کہا کہ وہ اس کارروائی کاحصہ نہیں بنے گی جس کے نتائج کے بارے میں معلوم ہی ہے کہ ان کی منصوبہ بندی پہلے ہی کی جاچکی ہے ۔ایک ٹوئٹ میں آغاروح اللہ ،جو کبھی نیشنل کانفرنس کے ترجمان اعلیٰ رہ چکے ہیں،نے کہا،’’اپنے حقوق کیلئے کھڑاہونے کیلئے کبھی بہت زیادہ دیر نہیں ہوئی ہوتی ہے۔غیرابہام آگے کاراستہ ہے۔اُمید ہے کہ اس مکتوب سے اندرون پارٹی موافقت کی عکاسی ہوگی۔مکتوب کاپیغام قابل ستائش ہے‘‘۔ سابق وزیراور بااثر شعیہ رہنما کی نیشنل کانفرنس کی قیادت سے شکایت ہے کہ کیسے ڈاکٹر فاروق عبداللہ اور عمر عبداللہ نے مابعد اگست2019کے جموں کشمیرکے حالات کوکیسے ہینڈل کیا۔وزیراعظم نریندرمودی کی طرف سے طلب کئے گئے کل جماعتی اجلاس میں مین اسٹریم جماعتوں کی شرکت کرنے کے فوراًبعدمہدی نے پارٹی قیادت کیخلاف انگلی اُٹھائی ۔ انہوں نے ٹوئٹ کیا،’’کون سی قوم یاسماج اپنے آپ کو غیر اہم چیزوں سے مطمئن کرسکتی ہے جب ان کے حقوق اور وقار کوزبردستی ان سے چھیناگیا ہو؟مجھے نہیں معلوم کسی قوم کو یہ منظور ہوگااور وہ اپنے کو نئے کم ترین سے مطمئن کرے گاجواس کے مرضی کے خلاف اِس پرتھوپاگیا ہو‘‘۔ نیشنل کانفرنس کے منحرف رہنما نے کل جماعتی اجلاس کو ایک سطر میں جمع کرکے کہا،’’حدبندی میں شمولیت اورچنائو میں شرکت سے متعلق جانکاری سیشن‘‘۔پیپلزڈیموکریٹک پارٹی نے حد بندی کمیشن کے کام میں حصہ نہ لینے  کا فیصلہ کیا ہے اور کہا ہے کہ اس کی پہلے سے ہی منصوبہ بندی کی گئی ہے۔