حج2019:4 جولائی کو پروازوں کا سلسلہ شروع ہوگا

سرینگر//گورنر کے مشیر خورشید احمد گنائی نے پولیس اور سول انتظامیہ کے افسروں کی ایک اعلیٰ سطحی میٹنگ کے دوران اس سال کے حج کے لئے انتظامات کو حتمی شکل دی۔ انہوں نے عازمین کے لئے ہر طرح کے انتظامات مکمل کرنے کی ضرورت پر زور دیا۔میٹنگ میں کمشنر سیکریٹری مال شاہد عنایت اللہ، صوبائی کمشنر جموں سنجیو ورما، ڈی آئی جی سینٹرل کشمیر رینج وی کے بردی، ایڈیشنل کمشنر کشمیر تصدق حُسین میر، سی ای او حج کمیٹی عبدالسلام میر، آر ٹی او کشمیر اکرم اللہ ٹاک، ایم ڈی ، جے کے ایس آر ٹی سی بلال احمد بٹ، ایس ایس پی سرینگر ڈاکٹر حسیب مغل، اسسٹنٹ ڈائریکٹر اطلاعات محمد اسلم خان کے علاوہ مختلف محکموں کے کئی دیگر افسران بھی موجودتھے۔کمشنر سیکریٹری مال نے میٹنگ میں جانکاری دی کہ عازمین حج کے لئے ہر طرح کے انتظامات مکمل کئے گئے ہیں۔سی ای او سٹیٹ حج کمیٹی نے جانکاری دی کہ اس سال ریاست سے کل11527 عازمین حج سفر محمود کے لئے روانہ ہورہے ہیں جن میں جموں کے1351 اور لداخ صوبے کے107 عازمین شامل ہیں۔ انہوں نے مزید کہا کہ ان میں سے10759 سرینگر جبکہ768 عازمین سفر محمود نئی دہلی سے روانہ ہوں گے۔اس موقعہ پر مزید بتایا گیا کہ49 خادم الحجاج عازمین کی سہولیت کے لئے اُن کے ساتھ روانہ ہوں گے۔سی ای او نے کہا کہ حج ہاؤس سرینگر میں250 عازمین کے لئے قیام و طعال کی سہولیات میسر رکھی گئی ہیں۔ڈویثرنل کمشنر جموں نے کہا کہ جموں صوبے کے تمام اضلاع سے عازمین کو سرینگر پہنچانے کے لئے ٹرانسپورٹ کے خاطر خواہ انتظامات کئے گئے ہیں۔ علاوہ ازیں آج سے عازمین کے لئے ٹیکی کاری کا پروگرام شروع ہوا ہے جو اگلے تین روز کے اندر مکمل کیا جائے گا۔خورشید احمد گنائی کو جانکاری دی گئی کہ سرینگر سے4 جولائی کو پروازوں کا سلسلہ شروع ہوگا اور یہ عمل29 جولائی 2019 تک جاری رہے گا۔اس موقعہ پر بتایا گیا کہ پہلے17 دِن ہر روز2/2 پروازیں روانہ ہوں گی جبکہ باقی ماندہ دنوں میں ہر روز4/4 پروازیں اُڑان بھریں گی۔خورشید گنائی نے افسروں سے کہا کہ وہ بُزرگ عازمین کی نرم دلی کے ساتھ رہنمائی کریں اور انہیں ہر طرح کی جانکاری دستیاب رکھیں۔ انہوں نے کہا کہ عازمین میں بیداری پیدا کرنے کے لئے جدید ٹیکنالوجی اور سوشل میڈیا کو استعمال کیا جانا چاہئے۔مشیر موصوف نے کہا کہ عازمین کی سہولت کے لئے صحت سے متعلق احتیاطی تدابیر کو شائع کیا جانا چاہئے۔ انہوں نے کہا کہ اس سلسلے میں ماہرین طِب کی مشاورت حاصل کر کے ان تدابیر کو مقامی میڈیا کے ذریعے متعلقین تک پہنچایاجانا چاہئے۔ انہوں نے پولیس اور سول انتظامیہ پر زور دیا کہ وہ باہمی تال میل کے ساتھ کام کر کے عازمین کو ہرطرح کی سہولیات بہم پہنچائیں تا کہ انہیں کسی قسم کی دقتوں کا سامنا نہ کرنا پڑے۔