حادثہ کے زخمیوں کو جموں منتقل کرنے کے عوض رقم کی وصولی

 راجوری//سندر بنی میں گزشتہ روز ہوئے حادثہ کے زخمیوں کو جموں منتقل کرنے کے عوض سرکاری ایمبولنس کے ڈرائیور سے لی گئی رقم کی خبروں کا سنجیدہ نوٹس لیتے ہوئے ضلع انتظامیہ نے انکوائری کا حکم جاری کر دیا ہے ۔جیسا کہ کل خبر دی جا چکی ہے کہ گزشتہ روز سرینگر سے وایہ مغل روڈ جموں کی طرف آنے والے سیب لدھے ٹرک کو سیوٹ سندر بنی کے قریب حادثہ پیش آیا جس کے نتیجہ مٰں اس میں سوار تین افراد زخمی ہو گئے ۔ مقامی لوگوں نے انہیں سندر بنی ضلع ہسپتال منتقل کیا جہاں سے ڈاکٹروں نے ابتدائی طبی امداد فراہم کرنے کے بعد انہیں جموں میڈیکل کالج کے لئے ریفر کر دیا تھا۔ ہسپتال کی ایمبولنس نے انہیں جموں منتقل کیا لیکن اس کےلئے ڈرائیور نے ان سے رقم وصول کر لی۔ ان خبروں کا سنجیدہ نوٹس لیتے ہوئے ڈی سی راجوری محمد اعجاز اسد نے سی ایم او راجوری کو معاملہ کی مفصل تحقیقات کر کے رپورٹ دینے کے لئے کہا ہے ۔ سی ایم او راجوری نے بی ایم او سندر بنی سے رپورٹ طلب کر لی ہے ۔ بی ایم او کی طرف سے دی گئی رپورٹ زیر نمبر BMO/SB/1134-36 مورخہ 30.09.2018میں بتایا گیا ہے کہ ہسپتال انتظامیہ نے زخمیوں کو جموں ریفر کردیا تھا اور ڈیزل کی قیمت ہسپتال ڈیزل فنڈ سے ادا کی گئی تھی لیکن ڈرائیور نے انتظامیہ کی ہدایات کو نظر انداز کرتے ہوئے زخمیوں سے 1800روپے وصول کر لئے ۔ بی ایم او کی رپورٹ کے مطابق ڈرائیور کو قصور وار قرار دیا گیا ہے اور اسے یہ رقم واپس دینے کی بھی ہدایت دی ہے ۔ بی ایم او کی رپورٹ اور سی ایم او کی سفارشات کی بنیاد پر ڈی سی راجوری نے ایمبولنس ڈرائیور کو فوری طور پر معطل کر تے ہوئے سی ایم او کو ہدایت دی ہے کہ وہ ایسے معاملات میں زخمیوں یا مریضوں کو منتقل کرنے کے لئے واضح احکامات جاری کریں اور کسی بھی قسم کی خلاف ورزی کی صورت میں مطلوبہ کارروائی کی جائے۔