حادثاتی ہلاکتوں کا نہ تھمنے والا سلسلہ

 جموں //ستواری جموں اور گندوہ ڈوڈہ میں پیش آئے دو الگ الگ سڑک حادثات میں دو بھائیوں اور ایک لڑکی سمیت 4افراد لقمہ اجل بن گئے ہیںجبکہ دیگر کئی زخمی ہوئے ۔تفصیلات کے مطابق ستواری ہوائی اڈہ کے پاس ہوئے ایک حادثہ میں ایک 16سالہ لڑکی کی موت واقعہ ہوگئی جب کہ اس کا بھائی شدید زخمی ہو گیا ہے ۔ پولیس ذرائع نے بتایا کہ یہ حادثہ اس وقت پیش آیا جب صبح 9بجے کے قریب ائر پورٹ روڈ پرپٹرول پمپ کے قریب جا رہی سکوٹی کو کسی نامعلوم گاڑی نے ٹکر مار دی جس کے نتیجہ میں اس پراپنے بھائی کے ساتھ سوار 16سالہ جسویندر کور دختر سرجیت سنگھ ساکن اندرا نگر شدید زخمی ہو گئی ، اسے فوری طور پر میڈیکل کالج ہسپتال منتقل کیا گیا جہاں وہ زخموں کی تاب نہ لا کر چل بسی۔ اگر چہ سکوٹی چلا رہے اس کے بھائی کو بھی چوٹیں آئی ہیںتاہم اس کی حالت خطرہ سے باہر بیان کی جاتی ہے ۔ ستواری پولیس نے اس سلسلہ میں ایک ایف آئی آر 176/2018 زیر دفعہ 279, 337 of RPC درج کر کے خاطی ڈرائیور کی تلاش شروع کر دی ہے ۔ ادھرگندو کے کاہراہ علاقہ میں ایک بلیرو پک اپ گاڑی حادثہ کا شکار ہو گئی جس کے نتیجہ میںدو سگے بھائیوں سمیت 3افراد لقمہ اجل بن گئے ۔ پولیس ذرائع کے مطابق یہ حادثہ ٹھاٹھری کلہوتران روڈ پر پیاکل کے قریب پیش آیا جب چنیاس سے جموں کی طرف جارہی یہ گاڑی JK06A-1468 ایک موڑ پر ڈرائیور کے قابو سے باہر ہو کر 300فٹ گہری کھائی میں جا گری۔ حادثہ کی اطلاع ملتے ہی پولیس اور مقامی نوجوانوں نے زخمیوں کو ٹرومہ ہسپتال ٹھاٹھری پہنچایا جہاں ڈاکٹروں نے ڈرائیور شبیر احمد ولد ظفر اللہ بٹ اور نثار احمد ولد علی محمد ساکنان چنیاس بھلیسہ کو مردہ قرار دے دیا۔ یاسر عرفات ولد ظفر اللہ بٹ کو ابتدائی طبی امداد فراہم کرنے کے بعد ضلع ہسپتال ڈوڈہ منتقل کیا گیا جہاں اس نے بھی دم توڑ دیا۔اس طرح مرنے والوں کی تعداد 3ہو گئی ہے ۔ پولیس نے معاملہ درج کر کے تحقیقات شروع کر دی ہے ، قانونی لوازمات پورا کرنے کے بعد نعشیں آخری رسومات کے لئے لواحقین کے سپرد کر دی گئی ہیں۔ حادثہ کی خبر پہنچنے کے بعد چنیاس گائوں میں بیک وقت 3نوجوانوں کی موت سے صف ماتم بچھ گئی اور لوگوں کی بھاری تعداد نے تدفین میں شرکت کی۔