جیت حاصل کرنے والے 10لیڈران پارلیمنٹ کی رکنیت سے مستعفی

عظمیٰ مانیٹرنگ ڈیسک

نئی دہلی// پانچ ریاستوں میں ہونے والے اسمبلی انتخابات کے نتائج آنے کے بعد الیکشن جیتنے والے بی جے پی کے ارکان پارلیمنٹ نے پارلیمنٹ کی رکنیت سے استعفیٰ دے دیا ہے۔ بدھ کو ایسے 12 میں سے 10 ارکان پارلیمنٹ نے اپنے استعفے پیش کر دیے۔ دو ارکان پارلیمنٹ بالک ناتھ اور رینوکا سنگھ دہلی نہیں پہنچ سکے، وہ بھی جلد استعفیٰ دے دیں گے۔یاد رہے کہ تین ریاستوں مدھیہ پردیش، راجستھان اور چھتیس گڑھ میں مکمل اکثریت حاصل کرنے والی بی جے پی نے چار ریاستوں میں ہونے والے اسمبلی انتخابات میں 21 ارکان پارلیمنٹ کو ٹکٹ دیا تھا۔ جس وقت ارکان پارلیمنٹ نے استعفی پیش کیا، جے پی نڈا لوک سبھا اسپیکر اور راجیہ سبھا کے چیئرمین وہاں موجود تھے۔پارٹی نے راجستھان اور مدھیہ پردیش میں سات سات ممبران اسمبلی کو میدان میں اتارا تھا، جبکہ اس نے چھتیس گڑھ میں چار اور تلنگانہ میں تین ممبران اسمبلی کو ٹکٹ دیا تھا۔ استعفیٰ دینے والے ارکان پارلیمنٹ نریندر سنگھ تومر، پرہلاد سنگھ پٹیل، راکیش سنگھ، مدھیہ پردیش سے ادے پرتاپ اور ریتی پاٹھک، چھتیس گڑھ سے ارون ساؤ اور گومتی سائی اور راجستھان سے راجیہ وردھن سنگھ راٹھور، دیا کماری اور کروڑی لال مینا ہیں۔ہائی کمان کے فیصلے کے بعد مدھیہ پردیش میں قانون ساز اسمبلی کے انتخابات جیتنے والے مرکزی وزرا نریندر سنگھ تومر اور پرہلاد پٹیل نے لوک سبھا کی رکنیت سے استعفیٰ دے دیا ہے۔