جنید متو بی جے پی کاتسلیم شدہ میئر

سری نگر//ریاستی کانگریس نے سجاد غنی لون کی سربراہی والی پیپلز پارٹی کے اُس دعوے ،جس میں یہ کہا گیا تھا ’پیپلز پارٹی کے امیدوارنے سرینگر میئر کے انتخابات میں جیت درج کی ‘ کو یکسر مسترد کرتے ہوئے کہا ہے کہ جنید متو بی جے پی تسلیم شدہ میئر ہے نہ کہ پیپلزکانفرنس پارٹی کے میئر ہیں ۔پارٹی کے ریاستی صدر غلام احمد میر نے کہا ہے کہ پیپلز کانفرنس نے کارپوریشن میں صرف نشستوں پر جیت درج کی ہے اور کانگریس پارٹی 16نشستوں پر فتح حاصل کرکے سب سے بڑی پارٹی اُبھر کر سامنے آئی ہے جبکہ اس حوالے سے سجاد غنی لون کا دعویٰ بے بنیاد ہے ۔انہوں نے کہا کہ مرکزی وزیر داخلہ راج ناتھ سنگھ اور بھاجپا کے قومی جنرل سیکر یٹری رام مادھو کے حالیہ کشمیر دورے اس کھیل کا حصہ تھے ۔ریاستی کانگریس کے صدر غلام احمد میر نے پیپلز پارٹی کے اُس دعوے جس میں یہ کہا گیا کہ سرینگر کا میئر پیپلز کانفرنس کا ہے ، پر تحریری بیان کے ذریعے رد ِعمل ظاہر کرتے ہوئے کہا ہے کہ جنید متو پیپلز کانفرنس کا نہیں بلکہ بی جے پی تسلیم شدہ میئر ہیں ۔انہوں نے کہا کہ پیپلز کانفرنس نے بلدیاتی انتخابات کی صرف 4نشستوں پر جیت درج کی ہے لہٰذا پارٹی کا یہ دعویٰ کیا کہ سرینگر کا میئر اُن کا ہے ،صحیح نہیں ہے ۔غلام احمد میر نے سرینگر کے میئر اور ڈپٹی میئر کے انتخابی نتائج پر اپنا ردِ عمل ظاہر کرتے ہوئے کہا کہ بی جے پی نے جنید متو کو سرینگر کا میئر منتخب کرنے کیلئے ریاستی ومرکزی حکومتوں کا استعما ل کیا جبکہ اس کے لئے میونسپل قوانین میں ترمیم بھی کی گئی اور ’’ہارس ٹریڈنگ ‘‘ کے ذریعے سرینگر میئر کا انتخاب کیا گیا ۔انہوں نے کہا کہ جنید متو کے میئر منتخب ہونے کے بعد پیپلز کانفرنس کسی بھی طور پر یہ دعویٰ نہیں کرسکتی ہے کہ سرینگر کا میئر اُنکی جماعت کا ہے جبکہ اس جماعت کے پاس صرف4کونسلر ہیں ،جو میئر کا انتخاب نہیں کرسکتے ۔ان کا کہناتھا کہ دراصل حقیقت یہ ہے کہ جنید متو ناگپور کے آشرواد سے بی جے پی کے تسلیم شدہ میئر ہیں ،اور اس حقیقت سے انکار نہیں کیا جاسکتا ہے سرینگر کا نو منتخب میئر پیپلز کانفرنس کا نہیں بلکہ بی جے پی کا ہے ۔غلام احمد میر نے دعویٰ کیا کہ جنید متو کو سرینگر کا میئر منتخب کرنے کیلئے بھاجپا نے روپے اور سرکاری مشینری کا استعما ل کیا ۔انہوں نے کہا کہ جنید متو پیپلز کانفرنس کے امیدوار نہیں بلکہ بھاجپا کے تسلیم شدہ امیدوار تھے ۔ان کا کہناتھا کہ جنید متو کو سرینگر کا میئر منتخب کرنے کیلئے راج بھون کا بھی استعمال کیا گیا ۔ انہوں نے کہا کہ مرکزی وزیر داخلہ راج ناتھ سنگھ اور بھاجپا کے قومی جنرل سیکر یٹری رام مادھو کے حالیہ کشمیر دورے اس کھیل کا حصہ تھے ۔بیان کے مطابق کانگریس کے ریاستی صدر غلام احمد میر نے کہا کہ ایک عہدے کیلئے مرکزی وزیر داخلہ نے کشمیر کا دورہ کیا ،تاکہ جنید متو کو میئر منتخب کرنے کیلئے سرکاری وگور نر انتظامیہ کی مشینری کو بروئے کار لایا جاسکے ۔انہوں نے کہا کہ بی جے پی ،آر ایس ایس جمہوری اداروں کو کمزور کرنے کیلئے درپے ہے جس طرح ایس ایم سی سرینگر اور ملک کے دیگر حصوں میں جمہوری اداروں کاکیا گیا ۔انہوں نے کہا کہ سیکو لر جماعتوں کو سوچنا ہو گا کہ کس طرح بی جے پی ،آر ایس ایس کی استحصالی سیاست کو شکست دی جاسکے ۔