جنگ کسی مسئلہ کا حل نہیں،مذاکرات شروع کئے جائیں:وزیراعلیٰ

 جموں//بر صغیر ، بالخصوص جموں و کشمیر میں پیدا شدہ حالات سے نمٹنے کے لئے مرحوم مفتی محمد سعید کی پالیسیوں پر عمل پیرا ہونے کی ضرورت پر زور دیتے ہوئے پیپلز ڈیموکریٹک پارٹی صدر اورریاستی وزیر اعلیٰ محبوبہ مفتی نے کہا کہ ان کی جماعت کا ایجنڈا مذاکرات ہیں۔ پارٹی کے صوبہ جموں سے تعلق رکھنے والے ضلعی و زونل صدور کے ایک اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ ریاست میں پچھلے چند ماہ سے پیدا شدہ حالات اور اس کے نتیجہ میں ہند پاک تعلقات میں پنپ آئی کشیدگی اس بات کی متقاضی ہے کہ مفتی سعید کے سیاسی نظریات کو روبہ عمل لا کر حالات کو معمول پر لایا جائے۔ انہوں نے بتایا کہ پی ڈی پی رو ز اول سے ہی ہندوستان اور پاکستان کے مابین مذاکرات، امن و مفاہمت کی حامی رہی ہے کیوں کہ جنگ کسی بھی مسئلہ کاحل نہیں ہے، سرحدی عوام کے مسائل بھی اس بات کا تقاضا کرتے ہیں کہ دونوں ممالک فوری طور پر بات چیت کا سلسلہ شروع کریں تاکہ ریاست میں پائیدار امن کا قیام یقینی بنایا جا سکے۔ پی ڈی پی کی تشکیل کو ریاستی عوام کیلئے ایک اہم پیش رفت قرار دیتے ہوئے پارٹی صدر نے کہا کہ مرحوم مفتی محمد سعید کا مقصد ریاستی عوام کو ایک ایسا پلیٹ فارم مہیا کرنا تھا جہاں وہ اپنے جذبات کا آزادانہ اظہار کر سکیں،کیوں کہ جب تک لوگوں کو آزادانہ اظہار رائے کا موقعہ نہیں ملتا ،جموں کشمیر میں جمہوریت پھل پھول نہیں سکتی۔پارٹی کو زمینی سطح پر مضبوط بنانے کی تلقین کرتے ہوئے محبوبہ مفتی نے کارکنوں کو مفتی محمد سعید کے بتائے ہوئے راستہ پر چلنے کی ترغیب دی اور بتایا کہ مرحوم نے ہمیشہ عوامی مفادات کو اقتدار اور نجی فوائد پر ترجیح دی تھی۔ انہوں نے دعویٰ کیا کہ مرحوم نے بی جے پی کے ساتھ مخلوط حکومت تشکیل دینے کا انتہائی مشکل فیصلہ لیا تھا جس کا واحد مقصد جموں کشمیر میں امن و ترقی کے پروگرام کو آگے بڑھانا تھا جس میں 2005کے بعد پیش رفت نہ ہو سکی۔ محبوبہ مفتی نے کہا کہ حکومت بنانے کے لئے متبادل بھی اختیار کئے جا سکتے تھے لیکن ریاستی عوام کی مشکلات کو کم کرنے کیلئے انہوںنے یہ دشوار راہ منتخب کی تھی، بی جے پی کے ساتھ ہاتھ ملانے سے پہلے مہینوں کی عرق ریزی کے بعد کم از کم مشترکہ پروگرام مرتب کیا گیا ۔اشتعال انگیزیوں کے باوجود امن بنائے رکھنے کے لئے جموں کے لوگوں کی ستائش کرتے ہوئے وزیر اعلیٰ نے کہا کہ چناب اور پیر پنچال کی عوام نے بھی فہم و فراست کا مظاہرہ کرتے ہوئے تقسیم کی سیاست کرنے والوں کے عزائم کو ناکام بنا دیا۔ خطاب کرنے والوں میں سینئر نائب صدر رنگیل سنگھ، جنرل سیکرٹری محمد سرتاج مدنی، جنرل سیکرٹری محبوب اقبال نے بھی خطاب کیا۔