جموں کے نوجوان کا جرأت کا مظاہرہ

سرینگر //جموں کے ایک مسلم نوجوان نے بدھ کو جرات کا مظاہرہ کرتے ہوئے بڈشاہ پل سے دریائے جہلم میں چھلانگ مار کر ایک عدم شناخت لاش کو نکال کر پولیس کے حوالے کر دیا ۔بدھ کی شام قریب 4بجے بڈشاہ پل پر اچانک لوگوں کی بھیڑ جمع ہوئی کیونکہ لوگوں نے جہلم میں ایک عدم شناخت لاش کو تہرتے ہوئے دیکھا ۔اس دوران اگرچہ وہاں موجود لوگوں نے پولیس کو فون کر کے مطلع کیا اور پولیس بھی وہاں پہنچ گئی اتنے میں لوگوں کے بھیڑ سے جموں کا ایک نوجوان محمد شکیل بڈشاہ پل سے چھلانگ مار کر جہلم میں کود پڑا اور جرات کا مظاہرہ کرتے ہوئے اُس نے لاش کو باہر نکال کر پولیس کے حوالے کر دیا ۔مذکورہ نوجوان کا کہنا تھا کہ اُسے برداشت نہیں ہوا اور نہ ہی اُس نے پولیس کے آنے کا انتظار کیا ۔نوجوان نے کشمیر عظمیٰ کہ وہ اُس وقت بجبہاڑہ میں عارضی طور رہائش پذیر ہے اور وہ نگروٹہ جموں کا رہنے والا ہے ۔نوجوان کے مطابق وہ رسوئی گیس ٹھیک کرنے کا کام کرتا ہے اور وہ سامان لانے سرینگر آیا تھا تو ایسے میں اُس نے بڈشاہ پل پر لوگوں کی بھیڑ دیکھی اور وہ بھی پل پر پہنچ گیا ۔انہوںنے کہا کہ جب وہ وہاں پہنچا تو اُس نے لوگوں کی چیخ وپکار سنی، لوگ ایک دوسرے سے کہہ رہے تھے کہ ایک شخص پانی میں چلا گیا ہے اور اُس کی لاش تیر رہی ہے لیکن اُس کو باہر نکالنے کے حوالے سے کوئی بھی کچھ نہیں کر رہا ہے، ایسے میں مجھے برداشت نہیں ہوا اور نہ ہی میرے ضمیر نے یہ گوارہ کیا کہ میں بھی دیکھتا رہوںاور پھر جہلم میں کود پڑا اورلاش کو نکال کر پولیس کے حوالے کیا۔ وہاں موجود لوگوں نے نوجوان کی خوصلہ افزائی کی اور اُسے اس جرات کیلئے مبارک باد پیش کی۔پولیس نے لاش کو اپنی تویل میں لیکر تحقیقات شروع کر دی ہے ۔ معلوم رہے کہ تین ہفتے قبل بمنہ کے ٹنگہ پورہ علاقہ میں ایک بچہ کتے کو بچانے کے دوران نالہ میں ڈوب کر لقمہ اجل بن گیا تھااور وہ بچہ مذکورہ نوجوان کا قریبی رشتہ دار تھا ۔