جموں کے ساتھ امتیازکیخلاف نوجوان متحدہوں:جے جے ایس ایف

جموں//1966 میں پولیس کی گولیوں کانشانہ بن کرہلاک ہونے والے طلباء کی یادتازہ کرنے اورانہیں خراج عقیدت پیش کرنے کیلئے طلباء تنظیم جے جے ایس ایف نے اپنی سابقہ روایات کوبرقراررکھتے ہوئے 16اکتوبر 2017 سے تین روزہ برت شروع کیاتھاجوکہ ہون کے ساتھ اختتام پذیر ہوگیا۔اس موقعہ پرمہلوک طلباء کی آتماکی شانتی کے لئے پرارتھناکی گئی۔جن طلباء نے برت رکھاان کے نام سنیل چوہان ، سلیش کوتوال، رتیش چودھری اورپنکج کیرنی ہیں۔ جوائنٹ ڈائریکٹرمحکمہ زراعت جوکہ اس موقعہ پرمہمان خصوصی تھے نے کے ایس سمبیال نے برت پربیٹھے طلباء کو جوس پیش کیا جبکہ زورآور سنگھ جموال چیئرمین ٹیم جموں مہمان اعزازی تھے۔یادرہے کہ 1966 میں جموں کے ساتھ امتیازی سلوک کولیکراحتجاج کررہے طلباء برج موہن،سبھاش چندر،گلشن ہانڈہ اورگرچرن سنگھ پولیس کی فائرنگ میں ہلاک ہوگئے تھے۔مہلوک طلباء کی قربانیوں کویادکرنے کے لئے کے ایس سمبیال نے جے جے ایس ایف کی کاوشوں کوسراہا۔زورآورسنگھ نے اس موقعہ پراپنی تقریر میں کہاکہ جموںصوبہ کے ساتھ ہورہے امتیازی سلوک کودورکرنے کے لئے جموں کے لوگوں خاص طورسے نوجوانوں کومتحدہوناچاہیئے۔جے جے ایس ایف کے صدرپشپندرسنگھ نے اپنی تقریرمیں کہاکہ کسی بھی سماج میں طلباء کوریڑھ کی ہڈی کی حیثیت حاصل ہے۔انہوں نے طلباء سے کہاکہ وہ مہلوک طلباء سے تحریک حاصل کریں اورجموں کے ساتھ امتیازی سلوک کے خاتمہ کیلئے متحدہوجائیں۔