جموں کیساتھ امتیازکاخاتمہ علیحدہ ریاست سے ہی ممکن :ہرش دیو

ادھم پور//رام نگراسمبلی حلقہ کے مختلف دیہات چنینی ، تھلورہ، دھما، بٹل وغیرہ کے دورہ کے دوران عوامی اجتماعات سے خطاب کرتے ہوئے نیشنل پنتھرس پارٹی کے چیئرمین ہرش دیوسنگھ نے کہاکہ جموں صوبے کے ساتھ امتیازکاخاتمہ جموں کوعلیحدہ ریاست بنانے سے ہی ہوسکتاہے۔انہوں نے سال 2014 کے انتخابات کے دوران جاری کئے گئے ’’ویژن ڈاکیومنٹ ‘‘ اورجموں خطہ کے ساتھ روارکھے گئے سیاسی اورمعاشی امتیاز کوختم کرنے کے بارے میں وزیراعظم نریندرمودی اوردیگررہنمائوں کی یقین دہانیوں کی یاددہانی کرائی ۔انہوں نے ریاست جموں وکشمیر میں اسمبلی اورپارلیمانی حلقہ انتخابات کی جلداز جلدحدبندی کازوردارمطالبہ کیاہے۔ انہوں نے کہاکہ ریاست میں اسمبلی اورپارلیمانی حلقہ انتخابات کی حدبندی کی یقین دہانی اورعلاقائی بنیادوں پرکئے جارہے امتیازی سلوک کوختم کرنے کاوعدہ نہ صرف مرکزی بی جے پی رہنمائوں نے کیاتھا کہ بی جے پی نے اپنے انتخابی منشورمیں بھی عوام سے اس کاوعدہ کیاتھا ۔جموں کے لوگوں کے اس اہم مطالبہ کوپس پشت ڈالنے کے لئے پی ڈی پی۔بی جے پی مخلوط سرکارکوآڑے ہاتھ لیتے ہوئے ہرش دیونے حدبندی کے کام کوجلدازجلد شروع کیاجاناچاہیئے کیونکہ یہ ریاست کے عوام کابہت پرانا مطالبہ ہے۔انہوں نے کہاکہ مرکزی اورریاستی رہنمائوں کوچاہیئے کہ وہ عوام کے ساتھ کئے گئے اپنے وعدوں کوبغیرکسی تاخیرکے پوراکریں ۔انہوں نے مخلوط سرکارسے کہاکہ اگرحدبندی کے کام کواب بھی شروع نہ کیاگیاتوپنتھرس پارٹی بڑے پیمانے پرایجی ٹیشن شروع کرے گی جس کی تمام ترذمہ داری حکومت پرعائد ہوگی۔