جموں کشمیر میں جل جیون مشن کے تحت معیاری و صاف پانی کی ترسیل

 سری نگر// جموں کشمیر میں معیاری پانی کی فراہمی کو یقینی بنانے کے لیے، جل جیون مشن کے زیراہتمام جل شکتی محکمے نے جموں و کشمیر میں پانی کی جانچ کرنے والی 97 لیبارٹریاں قائم کی ہیں۔ جل جیون مشن کے تحت کل مختص فنڈ کا2فیصدپانی کے معیار کی نگرانی اور جانچ کی سرگرمیوں پر استعمال کیا جانا ہے جس میں بنیادی طور پر محکمہ لیبارٹری ٹیسٹنگ کے ذریعے پانی کے معیار کی نگرانی اور فیلڈ ٹیسٹ کٹس کا استعمال کرتے ہوئے مقامی پانی کے ذرائع کی جانچ اور نگرانی کررہا ہے۔ پینے کے پانی کے تمام ذرائع کا سال میں ایک بار کیمیائی آلودگی کے لیے اور سال میں دو بار جراثیمی پیمائش پرکھنے کے لیے ٹیسٹ کیا جاتا ہے۔ جموں کشمیر میں پانی کے معیار کی نگرانی پر مقامی لوگوں کو بااختیار بنانے کے لیے محکمہ جل شکتی محکمہ نے ہر گاؤں میں 5 افراد خاص طور پر خواتین کی شناخت اور تربیت کرنے کا مشن شروع کیا ہے۔ اس کمیٹی میں آشا کارکنان، صحت کارکنان، پانی سمیتی کے اراکین، اساتذہ، سیلف ہیلپ گروپ کے اراکین، وغیرہ، گاؤں کی سطح، اسکولوں اور آنگن واڑی مراکز پر ’فیلڈ ٹیسٹنگ کیٹس‘ جراثیمی شیشیوں کا استعمال کرتے ہوئے پانی کے معیار کی جانچ کریں گے۔ جل جیون مشن کے ایک  افسرکے مطابق، سب ڈویڑنل،بلاک لیبارٹریز اپنے دائرہ اختیار میں  صد فیصدپانی کے ذرائع کی جانچ کریں گی۔ان کا کہنا تھا کہ ایک بارکیمیائی  پیمائش کے لیے اور دو بار جراثیمی پیمائش کے لیے (مونسون سے پہلے اور بعد کے) سال میں، پانی کے معیار کے کم از کم 13 پیمانوںکا احاطہ کیا جاتا ہے اور مثبت آنے والے نمونوں کو فوری طور پر ضلع لیبارٹری میں بھیج دیا جاتا ہے۔ انہوں نے بتایا کہ ضلعی لیبارٹریز ہر ماہ پانی کے 250 ذرائع و نمونوں کی جانچ کرتا ہے (یعنی نیشنل مشن  آئی ایم آئی ایس پر دستیاب روسٹر کے ہدف کے مطابق ایک سال میں 3ہزار)جس میں جغرافیائی طور پر پھیلے ہوئے تمام ذرائع کا احاطہ کیا جاتا ہے جس میں مثبت ٹیسٹ کیے گئے نمونے بھی شامل ہیں۔مذکورہ افسر کا کہنا تھا کہ کم از کم  پانی کے معیار کے 13بنیادی پیمانے پر سب ڈویژن,بلاک لیبارٹری,موبائل لیبارٹری,ضلعی لیبارٹریوں پربھی مثبت جانچ شدہ نمونوں کو فوری طور پر ریاستی لیبارٹری کو بھیجا جاتا ہے۔انہوں نے کہا’’دیگر  پیمانوںکی جانچ ضلعی سطح پر مقامی آلودگی کے مطابق کی جا تی ہے۔‘‘جل جیون مشن نہ صرف نل کے پانی کی باقاعدگی سے فراہمی کو یقینی بناتا ہے بلکہ پانی کے معیار پر بھی زور دیتا ہے۔ پانی کی فراہمی کے آپریشن کی نگرانی، پینے کے پانی کی حفاظت کی جانچ، بیماریوں کے پھیلنے کی تحقیقاتی عمل اور احتیاطی تدابیر کے لیے پانی کی جانچ اہم ہے۔