جموں کشمیر بینک میں بھرتی امتحان دوبارہ لیا جائیگا

سرینگر / / جموں و کشمیر بینک میں بینکنگ ایسو سی ایٹس کی 1500خالی اسامیوں کی  بھرتی کیلئے آن لائن امتحان یکم جنوری2021سے جاری ہیں تاہم 3، 5 اور9جنوری کو برف باری کی وجہ سے جو اُمیدوار اس امتحان میں شامل ہونے کیلئے اپنے امتحانی سینٹروں پر نہیں پہنچ سکے تھے، ان کے لئے خوشخبری یہ ہے کہ IBPSنے اُن کیلئے اب دوبارہ سے امتحان منعقد کرانے کو منظوری دے دی ہے۔ متذکرہ تاریخوں پر جو امیدوار موسمی خرابی کی وجہ سے یہ امتحان نہیں دے سکے ہیں، انہیں نئے سرے سے امتحان میں شامل ہونے کے لئے اپنی خواہش کا اظہار کرنا ہوگا جس کیلئے 13 جنوری 2021  کی آدھی رات تک بینک کی ویب سائٹ پر لنک مہیا رہے گی۔ خواہش کا اظہار کرنے کے بعد 15جنوری کے بعد ایسے امیدوار نئی کال لیٹر ڈاؤن لوڈ کرسکتے ہیں ۔ اس ضمن میںجموں و کشمیر بینک کے چیئرمین و منیجنگ ڈائریکٹر راجیش کمار چھبر نے امتحان منعقد کرانے والی ایجنسی انسٹی چیوٹ آف بینکنگ پرسنل سلیکشن (IBPS) ممبئی کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ انہوں نے اپنی بہت کم وقت میںہماری اُس درخواست کو منظوری دیدی جو ہم نے ایجنسی کو کی تھی کہ وادی کشمیر میں غیر متوقع برف باری کی وجہ سے کئی امیدوار 3اور5 اور9جنوری کو امتحانی مراکز پر نہیں پہنچ سکے ہیں اور انکے لئے نئے امتحان کا بندوبست کیا جائے۔ خوش قسمتی یہ ہے کہ  IBPSاور تکنیکی مشاورت ماہر ایجنسی ٹاٹا کنسلٹنسی سروس(TCS)  نے ہمارے درخواست کو منظوری دیتے ہوئے اُن امیدواروں کیلئے نئے سرے سے امتحان منعقد کرانے کا فیصلہ کیا ہے۔ لیکن ساتھ ہی IBPSنے یہ بھی صاف کردیا ہے کہ یہ رعایت صرف ایک بار دی جاسکتی ہے اور آئندہ کوئی بھی ایسی درخواست  انہیں قابل قبول نہیں ہوگی کیونکہ آنے والے دنوں میں قومی سطح پر کئی سارے امتحان منعقد ہورے ہیں اور آئندہ کئی مہینوں تک امتحانی سینٹر دستیاب نہیں ہوگا۔جے کے بینک چیئرمین نے کہا کہ اگرچہ ان امتحانوں میں بینک کا رول صرف بطور مشاہدہ کار ہی تھا اور ممبئی کا معروف سلیکشن ادارہIBPS ان امتحانوں کو منعقد کرا رہا ہے تاہم کئی امیدواروں کے پر زور اسرار پر ہم نے یہ معاملہIBPSکی نوٹس میں لایا اور اُن سے  پُر زوردرخواست کی کہ ایسے امیدواروں کی گزارشات کا احترام کیا جائے کیونکہ بے وقت کی شدید برف باری  سے انہیں اپنے امتحانی مراکز پر پہنچنے میں دقت آئی ہے۔ IBPSاورTCSنے  ہماری درخواست اور ہمارے پر زور اسرار کو ملحوظ نظر رکھکرایسے امیدواروں کو یہ سہولیت بہم رکھی ۔ حالانکہ کئی لوگ اس پورے امتحان کو کالعدم کرانا چاہتے تھے لیکن اُن سے میں یہ کہنا چاہتا ہوں کہ یہ چیز بینک کے ہاتھوں میں نہیں تھی بلکہ یہIBPSکے دائرہ اختیار میں تھی۔ چیئرمین نے کہا کہ ہمیں خوشی ہے کہ ہماری کوشش رنگ لائی اور اب کسی بھی متاثر امیدوار کا یہ موقع ہاتھ سے نہیں نہ چھوٹے گا۔