جموں و کشمیر ہائی کورٹ

سرینگر//مرکزی زیرانتظام جموں و کشمیر کی عدالت عالیہ یعنی ہائی کورٹ کا نام تبدیل کرکے اب اسے ’’ ہائی کورٹ آف جموں و کشمیر اور لداخ ‘‘ کردیا گیا ہے۔ مرکزی وزارتِ قانون و انصاف کی جانب سے جاری ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ لمبے اور مشکل نام کی وجہ سے ہائی کورٹ آف جموں وکشمیر یونین ٹیریٹری اور لداخ یونین ٹیریٹری کا نام تبدیل کرکے اب ہائی کورٹ آف جموں و کشمیر اور لداخ کردیا گیا ہے۔جاری آرڈر میں کہا گیا ہے کہ عدالت کا نام نہ صرف لمبا تھا بلکہ مشکل بھی تھا۔بیان کے مطابق ہائی کورٹ کا نیا نام نہ صرف آسان ہے بلکہ ملک کی دیگر عدالتوں کے طرز پر بھی ہے۔اس میں مزید کہا گیا ہے کہ عدالت کا نام بدلنے کے حوالے سے جموں و کشمیر کے لیفٹیننٹ گورنر، لداخ کے لیفٹیننٹ گورنر اور ہائی کورٹ کے چیف جسٹس سے بھی اُنکی رائے لی گئی تھی۔ تینوں نے گزشتہ برس نام تبدیلی کیلئے حامی بھری تھی۔جموں و کشمیر کے لیفٹیننٹ گورنر نے27، اکتوبر2020 کو، لداخ کے لیفٹیننٹ گورنر نے اکتوبر 20اکتوبر 2020کو اور ہائی کورٹ کے چیف جسٹس نے21 نومبر 2020 کو اس حوالے سے کوئی اعتراض نہ ہونے یعنیNO-Objection ارسال کیا تھا۔قابلِ ذکر ہے کہ صدر جمہوریہ رام ناتھ کووند نے گزشتہ روز جموں و کشمیر تنظیم نو قانون 2021 پر دستخط کئے تھے۔