جموں و کشمیر کیلئے علیحدہ وزیر اعظم کا مطالبہ

کاس گنج// اپوزیشن پارٹیوں پر ووٹ بینک کی سیاست کرنے کا الزام لگاتے ہوئے بھارتیہ جنتا پارٹی(بی جے پی) صدر امت شاہ نے کہاکہ کشمیر کے حوالے سے جموں کشمیر کے سابق وزیر اعلی عمر عبداللہ کے بیان پر کانگریس، سماجوادی پارٹی اور بہوجن سماج پارٹی کو اپنا موقف واضح کرنا چاہئے۔کاس گنج کے پٹیالہ میں ایٹہ لوک سبھا امیدوار راجویر سنگھ عرف راجو بھیا کے حمایت میں منعقد ایک انتخابی ریلی سے خطاب کرتے ہوئے امت شاہ نے بدھ کو کہا کہ ایس پی۔ بی ایس پی اور کانگریس ووٹ بینک کی سیاست کرتی ہیں۔ بی ایس پی سپریمو مایاوتی کھلے عام ایک خاص طبقے کے ووٹ لینے کی خواہش کا اظہار کرتی ہیں۔عمر عبداللہ کے کشمیر میں علیحدہ وزیر اعظم کے بیان پر بولتے ہوئے کہا کہ ’’ میں گذشتہ پانچ دنوں سے راہل بابا سے کہہ رہاہوں ،اکھلیش سے کہہ رہا ہوں ۔مایاوتی سے کہہ رہا ہوں کہ اس پر کیا کرنا چاہئے لیکن ان میں سے کوئی کچھ نہیں کررہا ہے کیونکہ یہ لوگ ووٹ بینک کی سیاست کرتے ہیں۔ اس لئے تو مایاوتی چاہتی ہیں کہ ایک خاص طبقے کا ووٹ مل جائے۔ میں بی جے پی کا صدر ہونے کی وجہ سے یہ بتانا چاہتا ہوں کہ عمر عبد اللہ کی سات پستیں بھی کشمیر کو ہندوستان سے علیحدہ نہیں کر پائیں گی۔بی جے پی صدر نے کہا کہ حکومت کسی بھی دہشت گرد تنظیم سے بات چیت نہیں کرے گی اور اگر دہشت گردوں نے پھر سے غلطی کی تو ان کے پرخچے اڑا دئے جائیں گے۔ شاہ نے کہا’’ راہل بابا اور بوا۔ببوا دہشت گردوں کے تئیں نرم گوشہ رکھ سکتے ہیں لیکن مودی حکومت میں پاکستان کی طرف سے اگر کوئی گولی آئے گی تو ادھر سے گولہ جائے گا‘‘۔