جموں و کشمیر پہلی بار ایکساتھ امتحانات کے نتائج ایک لاکھ 75ہزار طلباء کا 8ویں جماعت امتحان پاس

بلال فرقانی

سرینگر// اسٹیٹ کونسل آف ایجوکیشنل ریسرچ اینڈ ٹریننگ (ایس سی ای آر ٹی) نے پیر کو تعلیمی سال-23 2022 کے درمیانی معیار کے نتائج کا اعلان کیا۔ یہ ایک اہم لمحہ ہے کیونکہ یہ پہلا موقع ہے جب حکومت نے جموں اور کشمیر میں ایک ساتھ تعلیمی کیلنڈر نافذ کیا اور مارچ-اپریل کے سیشن کے دوران امتحانات کا انعقاد کیا۔جموں و کشمیر کے تمام 20 اضلاع میں سرکاری اور نجی اسکولوں کے تقریباً 175,547 طلباء نے آٹھویں جماعت کے تعلیمی سال-23 2022 کی دوسری مدت کا امتحان دیا۔

 

ہموار اور موثر امتحانی عمل کو یقینی بنانے کے لیے جموں و کشمیر کے UT کو دو زونوں ’نرم اور سخت‘میں تقسیم کیا گیا تھا۔جوائنٹ ڈائریکٹر نے کہا، “نتائج بہت زیادہ مثبت رہے ہیں، کل 169,564 امیدواروں نے کوالیفائی کیا، جس کے نتیجے میں مجموعی طور پر 96.6 فیصد کامیاب ہوئے،” ۔جوائنٹ ڈائریکٹر نے کہ جموں ڈویژن میں کل 88,506 امیدواروں نے امتحان میں شرکت کی، جن میں سے 86,132 امیدواروں نے کوالیفائی کیا، جن میں سرکاری اسکولوں کے لیے 93.85 اور نجی اسکولوں کے لیے 97.84 امیدوار کامیاب ہوئے۔انہوں نے کہا کہکشمیر ڈویژن میں، کل 87,041 امیدواروں نے امتحان میں شرکت کی، جن میں سے 83,432 امیدواروں نے کوالیفائی کیا، جن کا پاس فیصد سرکاری اسکولوں کے لیے 95.67 اور نجی اسکولوں کے لیے 95.53 رہا۔ڈائریکٹر ایس سی ای آر ٹی، پروفیسر پرکھشت سنگھ منہاس نے طلباء کو ان کی کامیابی پر مبارکباد دی اور ان کی مستقبل کی کوششوں کے لیے نیک خواہشات کا اظہار کیا۔ انہوں نے SCERT، DIETs اور دیگر اسٹیک ہولڈرز کا بھی شکریہ ادا کیا جنہوں نے اس سخت مشق کو ممکن بنانے میں تعاون کیا۔SCERT اور متعلقہ (DIETs) کو امتحانات کے انعقاد کے پورے عمل کی نگرانی کا کام سونپا گیا تھا۔