جموں و کشمیر میں اگلی سرکار اپنی پارٹی کی ہی ہوگی :بخاری

نیوز ڈیسک

جموں//پنی پارٹی صدر سید محمد الطاف بخاری نے کہا ہے کہ جموں وکشمیر میں سماجی انصاف اور سبھی خطوں کی یکساں ترقی اور اقتصادی بااختیاری کی پالیسی کے سبب سماج کے سبھی طبقہ جات کے لوگ اپنی پارٹی کاررواں میں شامل ہورہے ہیں۔ بخاری پارٹی دفتر گاندھی نگر میں منعقدہ ایک تقریب کے دوران بول رہے تھے۔ اس تقریب کا اہتما م خواتین ونگ صوبائی نائب صدور پونیت کور، روپالی ران اور ضلع صدر جموں سربجیت کور نے کیاتھا۔ اسی نوعیت کا پروگرام یوتھ ونگ کارڈی نیٹرسنی سنگھ چب نے بھی کیاتھا۔ پارٹی میں شامل ہونے والوں کا خیر مقدم کرتے ہوئے الطاف بخاری نے کہاکہ اپنی پارٹی کی سماج کے سبھی طبقہ جات اور خطوں کی یکساں ترقی اور بہبودی کی پالیسی ہے جہاں کسی کے ساتھ کوئی امتیاز نہ ہو۔انہوں نے کہاکہ اپنی پارٹی نے سماجی انصاف اور سماج کے سبھی طبقہ جات کی اقتصادی ترقی کی پالیسی اپنائی ہے اور زمینی سطح پر پارٹی ورکرز اور لیڈرز بھی اس کو عملی جامہ پہنارہے ہیں۔ پارٹی صدر نے مزید کہا’اپنی پارٹی کا کاروان آگے بڑھ رہا ہے لوگوں کو احساس ہوگیا ہے کہ یہی واحد پارٹی ہے جو سچ بولتی ہے اور جس پر بھروسہ کیا جا سکتا ہے لہٰذ جموں و کشمیر میں اگلی سرکار اپنی پارٹی کی ہی ہوگی‘۔انہوں نے مزید کہا ’’ہمیں جموں و کشمیر کی ترقی اس طرح کرنی ہے کہ ہر ایک کے مفادات کا تحفظ ہو۔ معاشرہ استحصال سے پاک ہونا چاہیے اور ہر ایک کو اپنی صلاحیت کے مطابق ترقی کے مواقع ملنے چاہئیں،”ہم جموں و کشمیر کو ترقی یافتہ دیکھناچاہتے ہیں جس میں ہر کوئی مناسب طریقے سے تمام خطوں اور سبھی طبقہ جات کے لئے مساوی ترقی ہو‘‘۔انہوں نے پارٹی کی پالیسی سے عوام کو آگاہ کرنے پر پارٹی کے رہنماؤں اور کارکنوں کو بھی سراہااور اُمیدظاہر کی کہ سماج کے ہر طبقے کے لوگوں کی شمولیت سے پارٹی زمینی سطح پر پر مزید مضبوط ہوگی۔انہوں نے کہا کہ ’’اپنی پارٹی جموں و کشمیر میں اتحاد کی علامت بن چکی ہے اور لوگوں کو پارٹی سے بہت زیادہ توقعات ہیں کیونکہ دیگر سیاسی جماعتیں ان کی توقعات پر پورا اترنے میں ناکام رہی ہیں‘‘۔عوام کے جذبات کا استحصال کرنے والی سیاسی جماعتوں پر کو تنقید کانشانہ بناتے ہوئے کہاکہ ہم جموں و کشمیر کے دونوں خطوں کی مساوی ترقی کے لیے کام کریں گے اور لوگوں کے حقوق کا تحفظ کریں گے۔ ہم مقامی لوگوں کے لیے ملازمتوں، قدرتی وسائل اور زمین کی بھی حفاظت کریں گے۔انہوں نے کہا کہ باہر کے لوگوں کو جموں و کشمیر میں قدرتی وسائل کو لوٹنے کے لیے کھلی چھوٹ دی گئی ہے اور اپنی پارٹی انہیں مقامی لوگوں سے روزی روٹی چھیننے کا اجازت کسی کو نہیں دے گی۔ انہوں نے الزام لگایا کہ قدرتی وسائل کو باہر کے لوگوں کے حوالے کرنے کے بعد سینکڑوں لوگ بے روزگار ہو گئے ہیں۔