جموں صوبہ کوروناوائرس کی تیسری لہر دم بالآخر تھم گئی| جمعرات کو محض57متاثر

جموں//جموں صوبہ کورونا کی تیسری لہر دم توڑ چکی ہے اور جمعرات کو صوبہ میں محض57نئے معاملات سامنے آئے ہیں جبکہ 169مریض اس مرض سے شفایاب ہوکر ہسپتالوں سے رخصت ہوکر اپنے گھروں کو لوٹے ہیں۔حکومت کی طرف سے جاری کئے گئے روزانہ میڈیا بلیٹن میں بتایا گیا ہے کہ گزشتہ چوبیس گھنٹوں کے دوران صوبہ جموں کے ضلع جموں میں18،ضلع اودھمپور میں04،ضلع کٹھوعہ میں 05،ضلع رام بن میں 02،ضلع رِیاسی میں 01اور ضلع رام بن میں04ے معاملات سامنے آئے ہیں ۔راجوری ، سانبہ ، پونچھ ،کشتواڑ اضلاع سے کسی مثبت معاملے کی کوئی رِپورٹ نہیں آئی ہے۔ادھرڈوڈہ ضلع میں جمعرات کو کورونا وائرس کے 22 نئے مثبت معاملات سامنے آئے ہیں اور 38 مریض صحتیاب ہوئے ہیں۔اطلاعات کے مطابق جمعرات کو ڈوڈہ ضلع کے مختلف مقامات پر ہوئی کووڈ جانچ کے دوران 22 افراد کی ٹیسٹ رپورٹ مثبت آئی ہے جنہیں ہوم قرنطینہ میں رکھا گیا ہے اور 38 مریض صحتیاب ہوئے ہیں۔اس طرح سے ضلع میں فعال کیسوں کی تعداد سمٹ کر 221 و شفایاب ہوئے مریضوں کی مجموعی تعداد 11085 پہنچ گئی ہے۔ ضلع میں اب تک کووڈ 19 سے 144 افراد فوت ہوئے ہیں اور 695101 ٹیکے لگائے گئے ہیں۔بلیٹن میں مزید کہاگیا ہے کہ صوبہ میں اب تک2325افراد اس بیماری کا شکار ہوکر لقمہ اجل بن گئے ہیںجبکہ صوبہ میں اس وقت بھی 647افراد اس بیماری سے جوجھ رہے ہیں۔بلیٹن میں مزید کہا گیا ہے کہ اَب تک 2,30,67,287ٹیسٹوں کے نتائج دستیاب ہوئے ہیں جن میں سے 24؍فروری 2022کی شام تک2,26,14,565نمونوں کی رِپورٹ منفی اور 4,52,722 نمونوں کی رِپورٹ مثبت پائی گئی ہے۔علاوہ ازیں اَب تک60,91,647افراد کو نگرانی میں رکھا گیا ہے جن کا سفر ی پس منظر ہے اور جو مشتبہ معاملات کے رابطے میں آئے ہیں۔ اِن میں33,257اَفراد کو گھریلو قرنطین میں رکھا گیا ہے جس میں سرکار کی طرف سے چلائے جارہے قرنطین مراکز بھی شامل ہیں ۔1,087فراد کوآئیسولیشن میں رکھا گیا ہے جبکہ4,46,065اَفراد کو گھروں میں نگرانی میں رکھا گیا ہے۔اِسی طرح بلیٹن کے مطابق56,06,490اَفرادنے 28روزہ نگرانی مدت پوری کی ہے۔کووڈ ٹیکہ کاری کے بارے میں بلیٹن میں بتایا گیا ہے کہ گزشتہ چوبیس گھنٹوں کے دوران 20,550کووِڈ حفاظتی ٹیکے لگائے گئے ہیں جس سے ٹیکوں کی مجموعی تعداد 2,14,48,989تک پہنچ گئی ہے ۔اِس کے علاوہ جموں و کشمیر میںزائد اَز 18 برس عمر کی صد فیصد آبادی کو ٹیکے لگائے جاچکے ہیں۔