جموں سرینگر شاہراہ ٹریفک کیلئے دوسرے روز بھی بند

بانہال // گزشتہ تین روز سے جاری شدید بارشوں کی وجہ سے بند رہنے والی جموں سرینگر شاہراہ جمعہ کی دوپہر کو جزوی طور پر یکطرفہ ٹریفک کی آمد ورفت کیلئے بحال کی گئی تھی البتہ بعد دوپہر دوبارہ شاہراہ پر پسیاں اور پتھر گرآنے کے سبب بند ہو گئی ہے ۔رام بن اور بانہال کے علاقوں میں پسیاں اور پتھر گر انے کی وجہ سے شاہراہ بدھ کے بعد بند تھی اور جمعہ کے روز شاہراہ کو یکطرفہ ٹریفک کی آمد ورفت کیلئے بحال کیا گیا ۔پولیس ذرائع کے مطابق سڑک ابھی بحال ہی کی گئی تھی تو ایسے میں پنتھال کے مقام پسیاں اور پتھر گر آنے کا زبردست سلسلہ شروع ہوگیا جس کی وجہ سے پانچ سو کے قریب مسافر بردار گاڑیاں پنتھیال ،ڈگڈول ، سیری ، رام بن ، چندرکوٹ کے مقام درماندہ ہوکر رہ گئیں جبکہ سینکڑوں مال بردار ٹرکوں کو ادہمپور ، منوال ، ٹول پلازہ ، بائی پاس اور مجالٹہ کے مقام روک دیا گیا ہے۔ پنتھیال کے مقام پر گر تے پتھروں کا سلسلہ جمعرات کی شام تک جاری تھا ۔ ایک اندازے کے مطابق تین سو سے زائد مسافر گاڑیاں پنتھیال ، ڈگڈول ، سیری ، رام بن اور چندرکوٹ کے مقام پر روک دی گئی ہیں جبکہ مال بردار ٹرکوں کو ادہمپور میں ہی روک دیا گیا ہے۔ پولیس اور ٹریفک زرائع نے کشمیر عظمی کو بتایا کہ گذشتہ دو روز کی شدید بارشوں کی وجہ سے بانہال اور رام بن کے درمیان شاہراہ پر گر آئی ایک درجن کے قریب چھوٹی بڑی پسیوں کو صاف کیا گیا اور شاہراہ کو جمعہ کی بعد دوپہر قابل امدورفت بنایا گیا اور ایک سو کے قریب گاڑیوں کے پنتھیال پار کرنے کے بعد شاہراہ پھر بند ہوگئی ہے اور پنتھیال کے مقام پتھروں کے گرنے کا سلسلہ جاری تھا۔