جموںوکشمیر میں بدانتظامی دور کرنے کیلئیجلد انتخابات ناگزیر

 سرینگر //اپنی پارٹی صدر سید محمد الطاف بخاری نے جموں و کشمیر میں عوامی ترسیل کے اداروں پر بہت زیادہ اثر انداز ہونے والے گورننس خسارے پر شدید تشویش کا اظہار کیا۔صوبائی سطحی پارٹی اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے بخاری نے کہاکہ منتخب حکومت کی عدم موجودگی میں عوام اور حکومتی اداروں کے درمیان دوری بڑھتی جارہی ہے۔ جموں وکشمیر کے لوگ سخت پریشان حال ہیں اور بدقسمتی سے بیشتر افسران اُن کی مشکلات سننے اور حل کرنے میں کوئی دلچسپی نہیں رکھتے۔ اُن کی مشکلات کو زمینی سطح پر حل کرنے کا واحد حل یہ ہے کہ انہیں حکومت کی صورت میں نمائندگی دی جائے‘‘۔انہوں نے حکومت ِ ہند سے گذارش کی کہ فاسٹ ٹریک بنیاد پر حد بندی عمل شروع کیاجائے اور مقررہ مدت کے اندر جموں وکشمیر میں جلد سے جلد اسمبلی انتخابات کرائے جائیں۔بخاری نے پارٹی قیادت سے کہاکہ وہ متعلقہ علاقوں میں عوام تک رسائی کیلئے کیڈر کو متحرک کریں۔ انہوں نے کہا’’ایسا نہیں کہ ہم اقتدار میں آئے بغیر کچھ حاصل نہیں کرسکتے، لیکن ہمیں لوگوں کے ساتھ کئے ہوئے وعدوں کی تکمیل کے لئے بہت کچھ کرنا ہے، پارٹی کے ہر ورکر اور لیڈر کو پارٹی کے سماجی۔ سیاسی اور اقتصادی ایجنڈے کو جموں وکشمیر کے اطراف واکناف تک پہنچانے کے لئے کام کرنا چاہئے۔