جسٹس یم وی رمنا سپریم کورٹ کے نئے چیف جسٹس

 نئی دہلی//سپریم کورٹ کے سینئرترین جج جسٹس ایم وی رمنا بھارت کے نئے چیف جسٹس ہونگے۔ وہ 24اپریل کوچیف جسٹس آف انڈیا کاعہدہ سنبھالیں گے۔صدرجمہوریہ رام ناتھ کووندنے موجودہ چیف جسٹس  ایس اے بوبڈے کے ذریعہ کی گئی سفارش منظورکرتے ہوئے جسٹس این وی رمنا کوسپریم کورٹ کا48واں چیف جسٹس مقرر کیا ہے۔ایس اے بوبڈے23 اپریل کو سبکدوش ہوں گے۔ اپریل کو ایس اے بوبڈے اپنے عہدے سے سبکدوش ہورہے ہیں۔ جسٹس این وی رمنا27 اگست 1957 کو ریاست آندھرا پردیش کے پنورم نامی گائوں میں پیدا ہوئے۔انہوں نے سائنس اور قانون میں گریجویشن کی اور اپنے خاندان میں پہلے وکیل بنے۔انہیں 10 فروری1983 کو بار میں ایک وکیل کے طور پر نامزد کیا گیا تھا جس کے بعد انہوں نے آندھرا پردیش ہائی کورٹ، مرکز کے زیر انتظام قانونی اداروں ،آندھرا پردیش کے متعدد قانونی مراکز اور ملک کی سب سے بڑی عدالت میں پریکٹس کی۔وہ بھارت کے ریلوے سمیت متعدد سرکاری تنظیموں کے لئے پینل وکیل کے طور پر بھی اپنی خدمات انجام دے چکے ہیں۔جسٹس این وی رمنا کوسول اور کریمنل جیسی دفعات میں خصوصی عبور حاصل ہے۔ انہیں بین ریاستی ندی تنازعات اور انتخابات سے متعلق معاملات سمیت دیگر شعبوں بھی میں وکالت کا تجربہ ہے۔جسٹس این وی رمنا کو 27 جون2000 کو آندھرا پردیش ہائی کورٹ کے مستقل جج کے طور پر مقرر کیا گیا تھا۔10 مارچ 2013 سے 20 مئی 2013 کے درمیان انہوں نے آندھرا پردیش ہائی کورٹ میں کار گذار جج کے طور پر بھی کام کیا ہے۔آندھرا پردیش جوڈیشل اکادمی کے صدر کے عہدے پر رہتے ہوئے جسٹس رمنا نے بھارتی قانونی نظام کی تشہیر کے لئے مختلف پہل کی تھی۔جوڈیشل اکادمی کے صدر کے طور پر انہوں نے بھارت کی تاریخ میں پہلی دفعہ تمام رینک کے جوڈیشل افسران کی مشترکہ کانفرنس کا اہتمام کیا تھا۔