جسروٹیہ کو وزارتی قلمدان دینا افسوس ناک

سرینگر// کھٹوعہ کے ممبر اسمبلی راجیو جسروٹیہ کو  وزارت میں شامل کرنے پر حیرانگی کا اظہار کرتے ہوئے کشمیر اکنامک الائنس نے کہا ہے کہ انکی انجمن ان تقاریب کا بائیکاٹ کریں گی،جس میں مذکورہ وزیر کو مہمان کے بطور دعوت دی جائے گی۔کشمیر اکنامک الائنس کے چیئرمین حاجی محمد یاسین خان نے کہا کہ حکمران جماعت پی ڈی پی کی طرف سے بھاجپا کے ساتھ زمام اقتدار سنبھالنا بدقسمتی ہے۔ انہوں نے کہاکہ بھاجپا 8 سالہ کمسن بچی کی عصمت ریزی اور قتل میں ملوث مجرموں کو چھڑانا چاہتی ہے۔انہوں نے کہا کہ یہ سیاست یا مذہب کا معاملہ نہیں ہے،بلکہ انسانیت کا معاملہ ہے۔حاجی محمد یاسین خان نے کہا کہ بیرون ریاست الیکٹرانک میڈیا،جو کہ عام طور پر کشمیری عوام کے خلاف زہر اگلتا ہے،نے بھی ممبر اسمبلی کھٹوعہ کو وزارت میں شامل کرنے کے خلاف موقف بنا لیا،تواس صورتحال مین ریاستی لوگ کس طرح انہیں وزارت میں برداشت کر سکتے ہیں۔کشمیرٹریڈرس اینڈ مینو فیکچرس فیڈریشن کے سربراہ نے کہا کہ انکی انجمنیں انسانیت کو کاروبار کے برعکس ترجیح دیں گی،اور’’عصمت کے سوداگروں کے حامیوں‘‘کا بائیکاٹ کریں گے۔اس دوران انہوں نے نائب وزیر اعلیٰ کی طرف سے کھٹوعہ واقعہ کو معمولی واقعہ قرار دینے پر برہمی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ مذکورہ سیاست دان نے انسانیت کو شرمسار کیا۔