جامع مسجد کے ارد گردبلا جواز فورسزجمائوگہری سازش:حریت ع

سرینگر// حریت (ع) نے ماہ مقدس کے بابرکت ایام بالخصوص جمعتہ المبارک کے موقعہ پر مسلمانان کشمیر کی سب سے بڑی عبادتگاہ مرکزی جامع مسجد سرینگر جہاں جمعہ کے موقعہ پر وادی کے اطراف و اکناف سے لوگ نماز جمعہ کی ادائیگی اور میرواعظ کشمیر کے وعظ و تبلیغ سے استفادے کی غرض سے آتے ہیں کے ارد گرد بڑے پیمانے پر بلا جواز فورسز کی تعیناتی پرشدید ردعمل کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ جمعتہ المبارک کے موقعہ پر اس پورے علاقے کو جس طرح فوجی چھائونی میںتبدیل کردیا جاتا ہے وہ وہاں حالات کو کشیدہ بنانے کا موجب بنتے ہیں ۔بیان میں کہا کہ ایسا لگ رہا ہے کہ ریاستی انتظامیہ جان بوجھ کر جامع مسجد کے ارد گرد فورسز کو تعینات کرکے جامع مسجد کی مرکزیت کو زک پہنچانے کے ساتھ ساتھ امن عامہ کو درہم برہم کرنے کی مذموم پالیسی پر عمل پیرا ہے ۔بیان میں نماز جمعہ کے بعد فورسزکی طرف سے پیلٹ اور ٹیئر گیس شیلنگ سے درجنوں افراد شدید زخمی ہو گئے اور بہت سے شل مرکزی جامع مسجد کے اندر جاکر گرے جس سے وہاں نمازیوں میں خوف اور ہراسانیوں کا ماحول پیدا ہوا کو فورسز کی اشتعال انگیز حرکت قرار دیتے ہوئے اسکی پر زور مذمت کی گئی۔