تپتی دھوپ میں گھنٹوں کا انتظار …سرکاری سکولوں کے طلباء کیلئے گاڑیاں فراہم کرنیکی اپیل

 مینڈھر// گاڑیوں کا بندو بست نہ ہونے کی وجہ سے طالبات کو کئی گھنٹوں تک بس اڈہ پر کھڑا ہو کر گاڑی کا انتظار کرنا پڑتا ہے ۔ بس اڈہ مینڈھرمیں محکمہ دیہی ترقی کی طرف سے بیٹھنے کے لئے بھی کوئی شیڈ نہیں بنایاگیااور طالبات روزانہ گھنٹوں گاڑیوں کے انتظار میں تپتی دھوپ میں کھڑی رہتی ہیں ۔سکولی طلباء کے والدین کاکہناہے کہ انتظامیہ نے گورنمنٹ سکولوں کے بچوں کیلئے گاڑیوں کا کوئی انتظام نہیں رکھاجبکہ وہ اس سلسلے میں کئی مرتبہ گزارشات کرچکے ہیں کہ صبح اور شام کے اوقات گاڑیوں کا بندو بست کیا جائے تاکہ بچے آرام سے سکول آ جا سکیں۔ ان کا کہنا تھا کہ سب سے زیادہ مشکلات طالبات کو برداشت کرنی ہوتی ہیں جو سڑک کنارے انتظار کرتی رہتی ہیں اور وقت پر گھر واپس بھی نہیں پہنچ پاتی ۔والدین کاکہناہے کہ مینڈھر میں سومو سروس زیادہ چلتی ہے جس پر بچیوں کا سفر کرنا نہایت ہی مشکل ہوتا ہے کیونکہ سومو ڈرائیور  بارہ سے پندرہ مسافر گاڑیوں میں بٹھا ئے بغیر بس اڈہ سے باہر نکلتے ہی نہیں ۔ ان کا کہنا تھا کہ سکولی بچوں کے لئے بسیں لگائی جائیں تاکہ صبح اور شام وقت پر اپنے سکول پہنچ سکیں اور وقت پر واپس گھر پہنچ پائیں اوران کی تعلیم متاثر نہ ہونے پائے۔انہوںنے اس سلسلے میں ڈپٹی کمشنر پونچھ سے مداخلت کی اپیل کی ۔