تمام آبگاہوں کی وقت پرحد بندی کرنے کی صوبائی کمشنر کی تاکید

سرینگر//صوبائی کمشنر کشمیرپانڈورانگ پولے،نے ژونٹھ کوہل ،براری نمبل،رکھ آرتھ اور نالہ امیرخان سے ناجائز تجاوزات کو ہٹانے پرزوردیا ہے۔آبی پناہ گاہوں کے تحفظ سے متعلق ایک میٹنگ کی صدارت کرتے ہوئے انہوں نے آب گاہوں ولر، ہوکرسر، آنچار،گلسر، نارکرہ اور مانسپبل جھیلوں کی حدبندی، اراضی کی منتقلی، دیوار بندی، اورناجائزتجاوزات ہٹانے کے کام کی پیش رفت کا جائزہ لیا۔اس موقعہ پر صوبائی کمشنر نے ڈپٹی کمشنروں کو وقت پرآب گاہوں کی حد بندی کرنے اور ناجائز تجاوزات ہٹانے کی ہدایت دی ۔ انہوں نے آب گاہوں کی موثر نگرانی پرزوردیتے ہوئے حکام سے کہا کہ باربار غیرقانونی سرگرمیاں انجام دینے والوں کے خلاف سخت کاررائی کرکے کیس درج کیا جائے ۔صوبائی کمشنر نے آب گاہوں کے زیرالتواءرقبے کی حدبندی کرنے کے علاوہ حدبندی کرنے والے ستون نصب کرنے کی بھی ہدایت دی ۔انہوں نے کہا کہ اس سے آب گاہوں کی غیرقانونی قبضہ کو روکا جاسکے گا۔پولے نے آب گاہوں کو خوبصورت بنانے کی تاکید کرتے ہوئے متعلقہ حکام کوہدایت دی کہ وہ ہوکرسراور دیگر آب گاہوں سے کوڑے کرکٹ اور گندگی کوفوری طور ہٹانے کے اقدام کریں اورزوردیا کہ متبادل ڈمپنگ مقامات کو ہی اس کےلئے استعمال کیا جائے۔انہوں نے متعلقہ حکام کو آب گاہوں کو خوبصورت بنانے کے کام کو تیز کرنے کی تلقین کی اورآب گاہوں کے تحفظ سے متعلق بیداری پیدا کرنے کی اہمیت اُجاگر کی۔میٹنگ میں ڈپٹی کمشنر بانڈی پورہ، بڈگام، گاندربل اوردیگر متعلقہ حکام نے ازخود یا ویڈیو کانفرنس کے زریعے شرکت کی۔