ترکہ وانگام شوپیان مسلح تصادم، احتجاج اور پُرتشدد مظاہرے، کمسن طالب علم جاں بحق

 شوپیان// ترکہ وانگام شوپیان میں فورسز اور جنگجوئوں کے درمیان جاری خون ریز جھڑپ کے دوران گولی لگنے سے ایک کمسن طالب علم  جان بحق جبکہ 10دیگر زخمی ہوگئے ہیں جن میں ایک نوجوان انتہائی نازک حالت میں سرینگر منتقل کیا گیا ہے ۔رات دیر گئے تک علاقے کا محاصرہ جاری تھا جبکہ وقفے وقفے سے گولیوں کی آوازیں بھی سنائی دے رہی تھی ۔کمسن طالب علم کی ہلاکت کے خلاف شوپیان ،کولگام اور پلوامہ اضلاع میں حالات پھر کشیدہ ہوگئے اور لوگ گھروں سے نکل کر احتجاجی مظاہرے کرنے لگے ۔حکام نے جنوبی علاقوں میں انٹرنیٹ سہولیات کو معطل کردیا ہے ۔تفصیلات کے مطابق ترکہ وانگام شوپیاں میں عسکریت پسندوں اور سیکورٹی فورسز کے درمیان شدید تصادم کے دوران  سیکورٹی فورسز اور مظاہرین کے درمیان جھڑپوں کے دوران ایک دفعہ پھر راست فائرنگ ایک کمسن طالب علم عمر احمد کمہارر ولد مرحوم محمد عبداللہ کمہار موقعے پر ہی جان بحق  ہوا جبکہشدید طورپر زخمی ہونے والوں کی تعداد 10 بتائی جارہی ہے جن میں عنایت احمد ملہ ساکن ملہ ڈھیرہ شوپیان کو نازک حالات میں سرینگر منتقل کیا گیا ۔نمائندے کے مطابق بدھ کی شام5 بجے کے قریب فورسز نے شوپیاں کے گنہ پورہ ترکہ وانگام گائوں کو جونہی محاصرے میں لے کر گھر گھر تلاشی کارروائی شروع کی اس دوران رہائشی مکان میں محصور جنگجوئوں اور فورسز کے درمیان گولیوں کا تبادلہ شروع ہوا۔ فورسز نے آس پاس علاقوں میں چار دائروں والی سیکورٹی تعینات کرکے لوگوں کے چلنے پھرنے پر پابندی عائد کی ۔ معلوم ہوا ہے کہ سخت ترین پابندیوں کے باوجود آس پاس علاقوں کے نوجوان گھروں سے باہر آئے اور فورسز پر پتھرائو شروع کیا ۔ اس دوران پہلے سے تعینات  فورسز نے مظاہرین کو منتشر کرنے کیلئے اشک آور گیس کے گولوں کے ساتھ ساتھ پلیٹ فائرنگ کی۔ ذرائع نے بتایا کہ پلیٹ اور بلٹ فائر کرنے کے نتیجے میں 10کے قریب افراد زخمی ہوئے ہیں۔ پولیس ترجمان کی جانب سے جاری بیان کے مطابق تراکہ وانگام شوپیاں میں جھڑپ جاری ہیں ۔مقامی ذرائع کے مطابق رات دیر گئے ایک مکان سے آگ کے شعلے بلند ہورہے تھے جبکہ مظاہروں کا سلسلہ بھی رات دیر تک جاری تھا ۔ دفاعی ذرائع نے جھڑپ کے سلسلے میں بتایا کہ حزب کمانڈر اور اُس کے ساتھیوں کی موجودگی کی اطلاع ملنے کے بعد سیکورٹی فورسز نے جونہی تراکہ وانگام گائوں کو محاصرے میں لیاجنگجو مخالف آپریشن شروع کیا اس دوران رہائشی مکان میں محصور عسکریت پسندوں نے سیکورٹی فورسز پر فائرنگ کی ۔ دفاعی ذرائع نے بتایا کہ جھڑپ جاری ہے اور اس سلسلے میں مزید تفصیلات کا انتظار ہیں۔ مقامی ذرائع نے بتایا کہ جھڑپ کی جگہ زور دار دھماکوں کی آوازیں سنائی دیں ہیں ۔مزید تفصیلات کا انتظار ہے۔