ترال اور پلوامہ میں شبانہ چھاپے،12گرفتار

ترال+بانڈی پورہ//ترال میں فورسز نے شبانہ چھاپو ں کے دوران 2مقامی نوجوانوں کوگرفتار کر لیا ۔مقامی لوگوں نے گرفتاریوں کے خلاف دھر نا دیکر مکمل ہڑتال کی ادھر کریم آباد پلوامہ میں گذشتہ روز 12نوجوانوں کو حراست میں لیا گیا ۔  ترال بالا میں فورسز نے درمیانی شب ہلال احمد دھوبی اور ارشاد احمد ملہ کو چھاپوں کے دوران گرفتارکیا  ۔مقامی آبادی ،جن میں خواتین کی ایک بڑی تعداد بھی شامل تھی ،نے سوموارکو سڑکوں پر نکل کرزبردست احتجاج کیا اور دھرنادیکر نوجوانوں کی فوری رہائی کا مطالبہ کیا ۔ احتجاج کی وجہ سے ترال بالا میں مکمل جب کہ ترال پائین میں جزی ہڑتال رہی ۔ اس دوران ایس ایس پی اونتی پورہ نے گرفتاریوں کی تصدیق کرتے ہوئے بتایا کہ ارشاد احمد ملہ ایس پی اوز اور سیاسی لیڈران کو دڑانے اور دھمکانے کے علاوہ علاقے میں دھمکی آمیز پوسٹر چسپاں کرنے کا سرغنہ ہے اس لئے اسکی گرفتاری عمل میں لائی گئی ہے ۔ادھر کریم آباد پلوامہ میں گذشتہ شب پولیس و فورسز نے شبانہ چھاپوں کے دوران ایک درجن افراد کو گرفتار کیا۔ان میں سے جنگجوئوں کے کچھ رشتہ دار بھی شامل ہیں۔جن نوجوانوں کی گرفتاری عمل میں لائی گئی ان میں انعام الحق پنڈت،عارف لطیف،ریاض احمد بٹ، عادل احمد،سہیل احمد،ریئس احمد بٹ،وسیم احمد بٹ ،شیراز احمد احمد بٹ ،شبیر احمد شیخ،اور عمر کبیر میر شامل ہیں۔ ان میں سے کم سے کم تین نوجوان جنگجوئوں کے بھائی ہیں۔ادھرحاجن بانڈی پورہ  میں فورسز کی جانب سے دو جگہوں پر شروع کیا گیا سرچ آپریشن پرامن طور اختتام پذیر ہوگیا ۔ جنگجوئوں کی موجودگی کی اطلاع ملتے ہی 13آرآر ،پولیس کے سپیشل آپریشن گروپ اور سی آر پی ایف کی45ویں بٹالین نے مشترکہ طور پر حاجن کے سید محلہ اور میر محلہ کو پیر کی علی الصبح محاصرے میں لیکر سرچ آپریشن شروع کیا۔تاہم فورسز کا جنگجوئوں کیساتھ آمنا سامنا نہیں ہوا۔