تحریک حریت ضلع صدر کے گھر پر چھاپہ انتقام گیری:صحرائی

 سرینگر// تحریک حریت چیئرمین محمد اشرف صحرائی نے تنظیم کے ضلع صدر بارہمولہ مفتی عبدالاحد تارزو سوپور اور اُن کے بھائی محمد شفیع راتھر تارزو سوپور کے گھروں میں فوج کے شبانہ چھاپوںاور تلاشی کارروائی کی مذمت کی۔انہوں نے محمد شفیع راتھر کے دو فرزندوں امتیاز احمد راتھر اور غلام قادر راتھر کو گرفتار کرنے کی مذمت کرتے ہوئے کہا کہ ان گرفتاریوں کا کوئی جواز نہیں ہے۔صحرائی نے اس کارروائی کو انتقام گیری اور خوفزدہ کرنے کا عمل قرار دیا۔ لواحقین کے مطابق فوج کی ایک پارٹی نے رات کے 12بجے اُن کے گھروں پر چھاپے ڈالے اور تلاشی لی۔ تلاشی کی آڑ میں گھر کا سارا سامان تہس نہس کیا گیا۔ اہل خانہ کو ہراساں کیا گیا اور تلاشی کے دوران محمد شفیع راتھر کے دو فرزندوں کو گرفتار کرکے اپنے ساتھ لے گئے۔ یہ تلاشی کارروائیاں رات 12بجے سے 3بجے تک جاری رہیں۔ اس کے بعد جب گھروالے اُن کی ملاقات کیلئے گئے تو اُن کو گرفتار فرزندوں کے ساتھ ملاقات بھی نہیں دی گئی۔ صحرائی نے کہا کہ یہ گرفتاریاں بلا جواز ہے۔انہوں نے کہا کہ ایسی کارروائیوں سے عوام کو تحریک آزادی سے دور نہیں کیا جاسکتا ہے بلکہ ان مظالم سے عوام میں جزبہ آزادی کو بھرپور تقویت حاصل ہوتی ہے۔