تجارت کی معطلی سے بیروزگاری میں اضافہ ہوگا:شہناز

پونچھ//سابق ایم ایل سی ڈاکٹر شہنازگنائی نے آر پار تجارت کی معطلی پر سخت تشویش ظاہر کرتے ہوئے کہاہے کہ اس سے صرف مقامی بیروزگار نوجوانوں کے مسائل میں اضافہ ہوگا لہٰذا حکومت ہند فیصلے پر نظرثانی کرے اور تجارتی سلسلہ بحال کیاجائے ۔یہاں جاری بیان کے مطابق ڈاکٹرگنائی نے ریاستی گورنر ستیہ پال ملک سے اپیل کی کہ وہ اس معاملے کو حکوتِ ہند کی وزارتِ داخلہ کے ساتھ اٹھاکر حل کروائیں تاکہ بے روزگاری میں مزید اضافہ نہ ہونے پائے۔ اُنہوں نے کہا کہ اس تجارت میں اگرکسی قسم کی غیر قانونیت کا شُبہ ہے تو اُس کے لئے فُل باڈی سکینرز نصب کئے جائیں ۔ ڈاکٹر گنائی نے کہا کہ اس وقت سرحدی کشیدگی کو کم کرکے پڑوسی مُلکوں کے ساتھ اچھے روابط قائم کرنے کی ضرورت ہے اور اس کے لئے مزید سرحدی راستے کھولنے ہوں گے نہ کہ پہلے سے قائم کئے گئے تجارتی مراکز کو تعطل کا شکار بنانا ہے ۔ موصوفہ نے کہا کہ کامیاب اور بہترین حکومتیں بے روزگاری کو ختم کرکے ترقی کے نئے باب کھولنے میں کوشاں رہتی ہیں نہ کہ بند کرنے میں۔بیان کے مطابق ڈاکٹر شہناز گنائی ریاستی وقف کونسل کی رُکن نامزد ہونے کے بعد پہلی بار پونچھ پہنچیں جہاں عوام نے اُن کا استقبال کیا۔ اس موقعہ پر مقررین نے اس امید کا اظہا رکیاکہ وقف جائیداد کو تحفظ فراہم کیاجائے گا ۔اس دوران ریاستی وقف کونسل کے پونچھ سے نامزد کئے گئے دوسرے رُکن مولانا مفتی فاروق حُسین مصباحی بھی موجود تھے۔