تتاپانی گول میں غیرقانونی تجاوزات پرسرکاری کاروائی | روزگارنہیں چھیناجائے گا ، سرکاری طور پر نئی دکانیں تعمیر ہونگیں:تحصیلدارگول

گول//گول میں گرم پانی کے چشمہ تتا پانی میں انتظامیہ نے قدم اُٹھاتے ہوئے پولیس کو ساتھ لے کر غیر قانی ڈھانچوں کو ہٹانے کا کام شروع کیا تا ہم اس دوران یہاں موجود معزز شہری ، دکاندار و پنچایتی نمائندوں نے انتظامیہ سے وقت مانگا تا کہ وہ اپنا سامان کہیں محفوظ جگہ پر منتقل کر سکیں ۔ ذرائع ابلاغ کے ساتھ بات کرتے ہوئے تحصیلدار گول نثاق الفاروق گنائی نے کہا کہ یہاں پر کافی سرکاری اراضی پر لوگوں نے غیر قانی طورپر قبضہ کیا تھا اور ڈھانچے کھڑ ے گئے تھے اور اس سلسلے میں انتظامیہ نے تین بار نوٹس جاری کئے تھے لیکن اس پر کوئی عمل درآمد نہ ہو سکا ۔ انہوں نے کہا کہ آج چوتھی نوٹس جاری کیا اور ہم نے آج پولیس کو بھی ساتھ لیا اور یہاں غیر قانونی ڈھانچوں کو ہٹانا شروع کیا لیکن یہاں موجود لوگوں ، پنچایتی نمائندوں نے پندرہ تاریخ تک وقت مانگا تا کہ وہ اپنا سامان دوسری جگہ منتقل کر سکیں ۔ تحصیلدار گول نے کہا کہ یہاں پر سرکاری دکانیں بنائے گی اور سرکار کا ارادہ کسی سے روزگار چھیننا نہیں بلکہ ہر اُس شخص کو دکانیں الاٹ کی جائیں گیں جن کی پہلے سے یہاں قبضہ ہے اور دکانوں کا با ضابطہ طورپر کرایہ دینا پڑے گا تا کہ جو پیسہ آئے گا وہ یہیں پر تعمیر و ترقی پر لگایا جائے گا ۔ انہوں نے کہا کہ تتا پانی کو سیاحتی درجہ مل چکا ہے جس وجہ سے اس طرح کا ٹھوس قدم انتظامیہ نے اُٹھایا ہے ۔ تحصیلدار نے کہا کہ تتا پانی جو ریاست بھر میں مشہور سیاحتی مقام بھی ہے جسے جاذب نظر بنانے کے لئے ایک لائحہ عمل تیار کیا جا رہا ہے یہاں پر نئی تعمیرات ہوں گے اور اس کو مزید ترقی دی جائے گی ۔ اس موقعہ پر موجود بی ڈی سی چیر مین جاوید اقبال منہاس نے جہاں سرکار کی جانب سے تتا پانی کو سیاحتی نقشے پر لانے اور یہاں پر ترقیاتی پروجیکٹوں کو عملانے کا شکریہ ادا کیا لیکن وہیں انہوں نے انتظامیہ سے مانگ کہ جن لوگوں کے روزگار کو خطرہ لا حق ہے ان کے لئے یہاں جلد از جلد دکانیں تعمیر کی جائیں اور انہیں دکانیں الاٹ کی جائیں ۔ انہوں نے کہا کہ یہاں پر بارہ مہینے سیزن نہیں چلتا بلکہ کچھ مہینوں کے لئے اچھا سیزن ہوتا ہے جو ہاتھ سے نہیں نکلنا چاہئے کیونکہ ان لوگوں کے روزگار کا دار و مدار ہی اسی پر انحصار ہے ۔