بی جے پی بلاور بسوہلی کیلئے علیحدہ ضلع کی حامی سابق حکومتوں کے امتیازی سلوک کی وجہ سے اس خطے کو جائزحق نہیں ملا: ڈاکٹر جتیندر

نیوز ڈیسک
جموں// مرکزی وزیر ڈاکٹر جتیندر سنگھ نے کہا کہ بی جے پی ہمیشہ سے بلاور بسوہلی کے لئے علیحدہ ضلع کی حمایت کرتی رہی ہے اور جب وہ جموں و کشمیر میں اقتدار میں آئے گی تو وہ اس خطے کے لئے ایک پہاڑی ضلع کی تجویز پیش کرے گی۔ڈاکٹر جتیندر سنگھ نے ایک جلسہ عام سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ بی جے پی نے اپنے تنظیمی ڈھانچے میں کئی برسوں سے بلاور بسوہلی کو ایک علیحدہ ضلع کے طور پر تسلیم کیا ہے اور تنظیمی ذمہ داریوں کی تقسیم بھی اسی کے مطابق کی جاتی ہے۔انہوں نے کہا کہ پچھلی بار پی ڈی پی اور کانگریس کی مخلوط حکومت کے ذریعہ اضلاع کی تنظیم نو من مانی اور منطق سے عاری تھی۔ وزیر موصوف نے کہا کہ اگرچہ ہم جموں و کشمیر میں حزب اختلاف میں تھے ، لیکن ہم نے بلاور بسوہلی کے لئے علیحدہ پہاڑی ضلع کا پرزور مطالبہ کیا تھا لیکن اس وقت کی حکومت کے ذریعہ تشکیل دی گئی تنظیم نو کمیٹی نے اس پر کوئی توجہ نہیں دی اور اس کے بجائے ، کشمیر اور جموں کے دو ڈویژنوں میں سے ہر ایک کے لئے دس دس اضلاع رکھنے کا فیصلہ کیا۔انہوں نے کہا کہ یہ اس وقت کے حکمران اتحاد کے کہنے پر ان کے سیاسی مفادات کے لئے کیا گیا تھا۔ڈاکٹر جتیندر سنگھ نے کہا کہ پوری بلاور بسوہلی پٹی قدرتی خوبصورتی، بھرپور روایتی آرٹ خاص طور پر مصوری سے مالا مال ہے اور یہاں کے لوگوں نے طبی پیشے، انتظامیہ، تخلیقی فنون وغیرہ سمیت زندگی کے مختلف شعبوں میں اپنا نام بنایا ہے۔تاہم انہوں نے اس بات پر افسوس کا اظہار کیا کہ ماضی میں حکومتوں نے علاقائی امتیازی سلوک کی پالیسی پر عمل کیا جس کے نتیجے میں اس خطے کو اس کا حق نہیں ملا۔وزیر اعظم نریندر مودی کی قیادت والی حکومت کے پچھلے آٹھ سے نو برسوں کو یاد کرتے ہوئے ڈاکٹر جتیندر سنگھ نے کہا کہ 2014 کے بعد سے ہر خطے کے لئے مرکزی فنڈز اور وسائل کی منصفانہ تقسیم ہوئی ہے اور خاص طور پر 2019 میں جموں و کشمیر کے یونین ٹریٹری میں تبدیل ہونے کے بعد اس بات کو یقینی بنانے کی شعوری کوشش کی گئی ہے کہ لوگوں کے ہر طبقے اور ہر خطے کو اس کا حق ملے۔ڈاکٹر جتیندر سنگھ نے وزیر اعظم نریندر مودی کا شکریہ ادا کیا کہ انہوں نے اس علاقے کو ڈوڈہ بھدرواہ سے جوڑنے والی تاریخی چترگالا سرنگ کی منظوری میں سہولت فراہم کی ہے ، جس سے آمدنی اور روزگار کے مواقع پیدا ہونے کے علاوہ سفر کے وقت میں نمایاں کمی آئے گی۔انہوں نے بتایا کہ سڑک ٹرانسپورٹ اور شاہراہوں کے وزیر نے چھترگالا ٹنل کو نئے بھارت مالا پروجیکٹ میں شامل کرنے کی ہدایات جاری کی ہیں ۔ڈاکٹر جتیندر سنگھ نے یہ بھی کہا کہ انہوں نے ضلع انتظامیہ کو مشورہ دیا ہے کہ وہ عالمی شہرت یافتہ بسوہلی پینٹنگز کو فروغ دینے کے لئے ایک خصوصی مہم چلائیں تاکہ دور دراز کے لوگوں کو اس علاقے کی فنکارانہ مہارت کے بارے میں معلوم ہوسکے۔