بی ایس ایف کے دائرہ اختیار میں توسیع کے فیصلے پر سیاست گرم

چنڈی گڑھ// پنجاب، مغربی بنگال، راجستھان اور آسام میں بارڈر سکیورٹی فورس (بی ایس ایف) کے دائرہ اختیار کو 50 کلومیٹر تک بڑھانے کے مرکز کے فیصلے پر پنجاب میں سیاست گرم ہوگئی ہے ۔ اکالی دل کے رکن پارلیمنٹ اور پارٹی صدر سکھبیر بادل نے کہا کہ مرکز کو ریاستی حکومت کی رضامندی کے بغیر اس طرح کے فیصلے نہیں کرنے چاہئیں۔ انہوں نے اسے پچھلے دروازے سے پنجاب میں صدر راج نافذ کرنے کی مہم قرار دیا۔ ان کی قیادت میں اکالی دل نے گورنر ہاؤس کا گھیراؤ کرنے کی کوشش کی لیکن پولیس نے انہیں پہلے ہی روک لیا اور وہ گورنر ہاؤس کے قریب بیریکیڈ کے قریب دھرنے پر بیٹھ گئے ۔ بعد میں انہیں چنڈی گڑھ پولس نے حراست میں لے لیا۔ادھرمرکز ی حکومت کے فیصلے کی حمایت کرتے ہوئے سابق وزیر اعلیٰ کیپٹن امریندر سنگھ نے کہا کہ بارڈر سکیورٹی فورس کے اہلکاروں کی موجودگی میں اضافے سے ہم مضبوط ہوں گے ۔ ہمیں سکیورٹی فورسز کو سیاست میں گھسیٹنا بند کرنا چاہیے ۔چیف منسٹر چرنجیت سنگھ چننی نے کل کہا تھا کہ مرکز کو اس یکطرفہ فیصلے پر نظر ثانی کرنی چاہیے ۔ یہ ملک کے وفاقی ڈھانچے پر براہ راست حملہ ہے ۔ میں مرکزی وزیر داخلہ سے گزارش کرتا ہوں کہ یہ فیصلہ واپس لیں۔