بیک ٹو ولیج سوم مرحلہ| لیفٹیننٹ گورنر لائن آف کنٹرول پر مژھل پہنچ گئے

کپوارہ //  لیفٹیننٹ گورنر منوج سنہا نے کہا ہے کہ وہ جموں کشمیر میں ایسا ماحول پیدا کرنا چاہتے ہیں جس کے تحت روز گار ، تجارت ، صنعت کو ترقی حاصل ہو سکے اور یو ٹی کے دیہاتی علاقوں میں ہُنر میں کمی کو پورا کر کے اسے آتم نربھر بنایا جا سکے۔منوج سنہا نے کپواڑہ کے سرحدی علاقے مژھل کے دورے کے دوران بیک ٹو ولیج 3 میں شرکت کی ۔ انہوں نے کہا کہ مقامی دستکاری کو فروغ دینے اور روائتی ہُنروں میں تربیت فراہم کر کے خود روز گار کے مواقعے پیدا کرنا وقت کی اہم ضرورت ہے جس پر کام کرنا ہو گا ۔ انہوں نے مزید کہا کہ گذشتہ تین ماہ کے دوران 246 مقامی نوجوانوں بشمول 122 لڑکیوں کو دیہی صنعتکاری کیلئے تربیت فراہم کی گئی ۔ انہوں نے مزید کہا ’’کپوارہ کا شمار ایسپپریشنل اضلاع میں بہترین کارکردگی کی فہرست میں کیا گیا ہے اور اس علاقے کو اخروٹ کی پیداوار اور پروسیسنگ کیلئے ایک جدید صنعتی مرکز کے طور پر ترقی دی جائے گی ‘‘۔ مقامی آبادی کے دیرینہ مسئلے کا نوٹس لیتے ہوئے لیفٹیننٹ گورنر نے بے روز گار نوجوانوں کیلئے فوج میں بھرتی کیلئے مقامی ریلیوں کا اعلان کیا ۔ انہوں نے علاقے میں فوری طور پانچ موبائیل ٹاوروں کی تنصیب کی بھی ہدایت دی جو کہ مقامی آبادی کی دیرینہ مانگ ہے ۔ انہوں نے کہا کہ کپواڑہ ۔ بارہمولہ ریل لائن کی تعمیر یو ٹی حکومت کی ترجیحات میں شامل ہے جس کیلئے ابتدائی تجزیہ  پہلے ہی شروع کیا گیا ہے ۔ اس موقعہ پر لیفٹیننٹ گورنر نے 471.80 لاکھ روپے کی مالیت سے نصب کی گئی 33 کے وی خمریال ۔ مژھل لائن کا بھی افتتاح کیا جو علاقے کو قومی گرڈ کے ساتھ منسلک کرے گا  ۔ بی ایس این ایل وی سیٹ کے ساتھ انٹر نیٹ کیلئے ، 24 بنکروں ،متبادل محفوظ پناہ گاہوں ، 80.65 لاکھ روپے کی لاگت سے قائم کی گئی پنچائت اثاثوں کا افتتاح کیا ۔ اس موقعہ پر 2021-22 کیلئے مژھل کے گرام پنچایت ایکشن پلان کو بھی جاری کیا گیا ۔ انہوں نے کسان کریڈٹ کارڈ ، سپورٹس کٹ ، مالی امداد ، مختلف اسناد اور منظور نامے مختلف سکیموں کے تحت مستحقین میں تقسیم کئے ۔ انہوں نے مژھل اور کیرن کے لوگوں کو نیشنل الیکٹر سٹی گرڈ کے ذریعے بجلی حاصل کرنے کیلئے مبارکباد پیش کی جس کیلئے انہیں 70 سال تک انتظار کرنا پڑا اور یہ وزیر اعظم نریندر مودی کے یکساں ترقیاتی مشن کے  تحت ممکن ہوا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ باقی ماندہ بستیوں کو پاور گرڈ کے ساتھ منسلک کرنے کیلئے کوششیں جاری ہیں ۔ مقامی لوگوں نے لیفٹیننٹ گورنر کی جانب سے حال ہی میں طبی ایمر جنسیوں اور نامساعد صورتحال میں انخلاء کیلئے راج بھون کے چاپروں کو استعمال کے علان کیلئے اُن کا شکریہ ادا کیا ۔