بیٹیوں کے روشن مستقبل کیلئے بلاتفریق کام کررہے ہیں:وزیراعظم مودی

 پریاگ راج//وزیر اعظم نریندر مودی نے منگل کواترپردیش کے پریاگ راج میں منعقد‘خاتون بااختیاری سمیلن’سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ مرکزی و ریاست میں ڈبل انجن کی حکومت بغیر کسی تفریق،بغیر کسی جانبداری کے بیٹوں کے روشن مستقبل کے لئے لگاتار کام کررہی ہے ۔ وزیر اعظم نے خاتون بااختیاری سے وابستہ مختلف پروجیکٹوں کا افتتاح و سنگ بنیاد رکھنے کے بعد سمیلن سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ بیٹاں کوکھ میں ہی نہ مار دی جائیں بلکہ وہ بھی جنم لیں اس کے لئے ہم نے بیٹی بچاو۔بیٹی بڑھاو مہم کے تحت سماج میں بیداری پیدا کرنے کی کوشش کی مرکزی حکومت کی اسی مہم کا نتیجہ ہے کہ متعدد ریاستوں میں بیٹیوں کی تعداد میں قابل ذکر اضافہ ہوا ہے ۔بعد مودی نے ریمورٹ دبا کر 202 سپلیمنٹری نیوٹریشن مینوفیکچرنگ یونٹس کا سنگ بنیاد رکھنے کے ساتھ ہی خواتین کے ذریعہ چلائے جارہے ‘سیلف ہیلپ گروپس’ کے بینک کھاتوں میں 1000 کروڑ روپے کی رقم منتقل کی ، جس سے تقریبا 16 لاکھ خواتین اراکین کو فائدہ ملا۔ اس دوران وزیر اعظم مودی نے کسی کا نام لئے بغیر اپوزیشن پر نشانہ سادھا اور کہا کہ یوپی کی خواتین نے عزم کرلیا ہے کہ یہاں پہلے کی سرکاروں والا دور دوبارہ لوٹنے نہیں دیں گی۔ انہوں نے مرکز اور ریاستی سرکار کے ذریعہ خواتین کیلئے چلائی جارہی اسکیموں کا بھی تذکرہ کیا۔انہوں نے اپنی مدد آپ گروپ کی بہنوں کو خودکفیل ہندوستان کی چمپین قرار دیا اور کہا کہ یہ گروپ اصل میں‘ملک کو مدد فراہم کرنے والا گروپ ہے ۔وزیراعظم مودی مشن خاتون بااختیاری کے تحت منعقد پروگرام میں موجود خواتین کے جم غفیر سے خطاب کرتے ہوئے بہن۔بیٹیوں کے بہبود کے لئے حکومت کے ذریعہ کئے گئے اقدامات اور اسکیمات کا ذکر کرتے ہوئے مودی نے کہا کہ۔حاملہ خواتین کی ٹیکہ کاری،اسپتال میں ڈلیوری،حمل کے دوران تغذیہ بخش غذا پر مکمل دھیان دیا گیا۔ اور اس کے لئے حاملہ خاتون کے اکاونٹ میں 5ہزارروپئے بہم پہنچانے کا انتظام کیا۔یہ اسکیمات گاوں۔غریب کے لئے بیٹیوں کے لئے اعتماد کا بہت بڑا ذریعہ بن رہی ہے ۔لڑکیوں کی شادی کی عمر بڑھانے کے معاملے میں اپوزیشن کو ہدف تنقدی بناتے ہوئے مودی نے کہا کہ بیٹیوں کی شادی عمر بڑھانے پر آج کس کوتکلیف ہورہی ہے یہ سب دیکھ رہے ہیں۔انہوں نے کہا کہ بیٹیوں کو پڑھائی لکھائی ، آگے بڑھنے اور برابر مواقع ملے اس کے لئے ان کی شادی کی عمر 21سال کرنے کی کوشش کی جارہی ہے ۔