بیوائیں، یتیم، معذور اور معمر اشخاص باز آباد کاری کیلئے 8.35 کروڑ کا ایکشن پلان منظور

نیوز ڈیسک

 

جموں// چیف سکریٹری ڈاکٹر ارون کمار مہتا نے بدھ کو سماجی بہبود محکمہ، جموں و کشمیر کے ذریعہ قائم کردہ بیواؤں، یتیموں، معذوروں اور معمر افراد (عسکریت پسندی کے متاثرین) کی بحالی کی کونسل کی ایگزیکٹو کونسل میٹنگ کی صدارت کی۔اجلاس میں ایڈیشنل چیف سیکرٹری داخلہ نے بھی شرکت کی۔ڈاکٹر مہتا نے کونسل سے پچھلے سال کی کارکردگی کے بارے میں دریافت کیا۔ انہوں نے ان پر زور دیا کہ وہ آدھار نمبر کے ساتھ فائدہ اٹھانے والوں کے کھاتوں کی بیجنگ کو تیز کریں۔ انہوں نے انہیں ایک ماہ میں کام مکمل کرنے کی ہدایت کی۔

 

چیف سیکرٹری نے کونسل کو تاکید کی کہ ان کا کام انتہائی اہمیت کا حامل ہے۔ انہوں نے ان سے کہا کہ وہ تمام متاثرین کو بروقت امداد فراہم کریں اور ان کی بحالی کے لیے تمام اقدامات کریں۔انہوں نے لیفٹیننٹ گورنر کی ہدایت کے مطابق تمام اسپیشللی ایبلڈ پرسنز (SAP) میں ٹرائی سائیکلوں کی تقسیم پر زور دیا۔ انہوں نے ہدایت کی کہ وطن کو جانو پروگرام کے تحت ملک کے مختلف حصوں میں جانے والے تمام نوجوانوں کو ہر طرح سے سہولت فراہم کی جائے اور وہ جس شہر میں جائیں وہاں ان کے قیام کو آرام دہ بنایا جائے۔کونسل کے اجلاس کے دوران یہ بات سامنے آئی کہ 6800 مستفیدین کی کوریج کے لیے 23-2022 کے لیے 8.35 کروڑ روپے کا ایکشن پلان مرتب کیا گیا ہے۔ بتایا گیا کہ اس کے اجزاء میں بیواؤں، معمر افراد اور خصوصی طور پر معذور افراد کو 1000 روپے ماہانہ پنشن کے علاوہ جوان بیواؤں یا بالغ بیٹیوں کو 40000 روپے کی شادی کی امداد شامل ہے۔میٹنگ کو یہ بھی بتایا گیا کہ کونسل لیفٹیننٹ گورنر کی ہدایت کے مطابق سال کے دوران ایس اے پی کے باقی تمام رجسٹرڈ 2700 کیسز کو موٹرائزڈ ٹرائی سائیکلیں فراہم کرنے کی تجویز رکھتی ہے۔ مزید بتایا گیا کہ وزارت داخلہ کے زیر اہتمام ’وطنکو جانو‘ کے تحت، کونسل اپنے یتیم خانوں، محکمہ کے بالاشرم/ناری نکیتن سے تقریباً 500 بچوں کو ممبئی، لکھنؤ، جے پور، حیدرآباد وغیرہ شہروں میں لے جا رہی ہے۔