بین الاقوامی سرحد پرصورتحال انتہائی کشیدہ : آئی جی بی ایس ایف،مہلوک جوان کوخراج پیش

 جموں//سرحدی حفاظتی فورس (بی ایس ایف ) کے جموں فرنٹیئر کے انسپکٹر جنرل رام اوتار نے بین الاقوامی سرحد کی صورتحال کو انتہائی کشیدہ قرار دیا ۔ادھر انسپکٹر جنرل آف پولیس جموں زون کا کہنا ہے کہ کشیدہ زدہ علاقوں میں راحت وبچائو کاری کا م شروع کیا گیا ہے ۔کشمیر نیوز نیٹ ورک کے مطابق جموں کی سرحدی صورتحال کے حوالے سے بی ایس ایف اور پولیس کے اعلیٰ حکام نے کہا کہ متاثرہ علاقوں میں راحت وبچائو کا ری کا سلسلہ شروع کردیا گیا ۔جموں میں نامہ نگاروں سے بات کرتے ہوئے بی ایس ایف جموں فرنٹیئر کے انسپکٹر جنرل رام اوتار نے کہا کہ بین الاقوامی سرحد پر صورتحال انتہائی کشیدہ ہے۔ انہوں نے کہا کہ بی ایس ایف کی جانب سے پاکستانی رینجرز کی فائرنگ کا مئوثر جواب دیا جارہا ہے۔ انہوں نے کہا ’صورتحال بہت کشیدہ ہے، ہم خاموش نہیں بیٹھے ہیں، ہم بھی پاکستان کی فائرنگ کا موثر جواب دے رہے ہیں‘۔ انہوں نے کہا ’پاکستان کی طرف سے سرحدی چوکیوں اور آبادی والے علاقوں کو نشانہ بنانا کوئی نئی بات نہیں ہے،ہر بار اُن کی اشتعال انگیزی کا موثر جواب دیا جاتا ہے، اُن کو جانی اور مالی نقصان سے دوچار ہونا پڑتا ہے‘۔ رام اوتار نے کہا کہ بی ایس ایف اہلکاروں نے جوابی کاروائی میں پاکستان کو کافی نقصان پہنچا ہے۔ انہوں نے کہا ’ہم نے اس بار بھی اُن کی فائرنگ کا موثر جواب دیا ہے۔ اُن کا بھی بھاری جانی اور مالی نقصان ہوا ہے۔ پاکستان کو ہوئے نقصان کے بارے میں آپ کو وہاں کے میڈیا سے معلوم ہوجائے گا‘۔ ادھر جموں زون پولیس کے انسپکٹر جنرل ایس ڈی سنگھ جموال نے کہا کہ کشیدہ زدہ علاقوں میں راحت وبچائو کاری کا م شروع کیا گیا ہے۔ انہوں نے کہا ’فائرنگ کا سلسلہ وقفہ وقفہ سے جاری ہے، ہم نے لوگوں کو بچانے کے لئے ضروری اقدامات اٹھائے ہیں، ہمارے اہلکار جمعہ کی علی الصبح سے ہی بچاؤ کاروائیوں میں لگے ہوئے ہیں‘۔ان کاکہناتھا ’ متاثرہ علاقوں سے لوگوں کو نکالا گیا ہے، ریلیف کیمپوں کو چالو کردیا گیا ہے، ان کیمپوں میں ہر ایک سہولیت دستیاب بنائی گئی ہے، ہم ہر کسی بھی چیلنج کا مقابلہ کرنے کے لئے تیار ہیں‘۔علاوہ ازیں مہلوک فوجی جوان کوبی ایف ایف کے سینئرعہدیداران نے ان کی میت پرگل دائرے پیش کرکے خراج عقیدت پیش کیا۔