بیرون وادی کشمیر یوں پر ظلم وستم

جموں //جمعیت اہلحدیث جموں و کشمیر کے صدر مولانا غلام محمد بٹ اور ناظم اعلیٰ ڈاکٹر عبد الطیف الکندی نے جموں میں مسلمانوں پر ہورہی مسلسل زیادتیوں اور جورو ظلم پر زبردست بر ہمی کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ یہاں کھلے عام قانون وضوابط کی دھجیاں اڑائی جارہی ہیں اور انتظامیہ نے بلوا یئوں کو کھلی چھوٹ دے رکھی ہے جس کا اعتراف جموں کا امن پسند طبقہ اور تجارتی انجمنیں بھی برملا انداز میں کر رہی ہیں ،املاک اور گاڑیوں کو دن کی پوری روشنی میں نذر آتش کیا جارہا ہے اور عام کشمیریوں بشمول ملازمین اور طلاب کے، ان کا قافیہ حیات تنگ کیا جارہا ہے، اس پر مستزاد کر فیو کی سختیاں جس کی وجہ سے نہ صرف یہ کہ ان کا دم گھٹ رہا ہے بلکہ روٹی دودھ کے لیئے بھی وہ اور ان کے بچے تر س رہے ہیں اور ہر طرف خوف و ہراس کا عالم ہے ۔بیان میں اس لاقانونیت اور دھو نس دباؤ والے طرز عمل کو بدلنے اور مجرمین کو قرار واقعی سزا دینے کا زور دار مطالبہ کیا گیا اور کہا گیا کہ سبھی کشمیریوں کے جان و مال کی حفاظت کو بہرحال یقینی بنا یا جائے۔ بیان کے مطابق بھارت کی مختلف ریا ستوں میں تلاش معاش اور حصول تعلیم میں مصروف وادی واسیوں کے جا ن کے لالے پڑے ہوئے ہیں اور بہت سارے مقامات سے انہیں دھمکانے اور مشق ستم بنا نے کی اطلاعات نے ساری وادی کو سرا پا اضطراب بنا دیا ہے ، انہیں ذہنی اور جسمانی تشدد کا شکار بنانے پر کرب واضطراب کا اظہار کرتے ہوئے کہا گیا کہ تشدد بہر حال قابل مذمت ہے جہاں بھی ہو اور جس نوع کا بھی ہو۔