بیرون ریاست مقیم شال پھیری والے خوفزدہ

کپوارہ// لیتہ پورہ پلوامہ میں سی آر پی ایف کانوائے پر حملہ کے بعد بیرون ریاستوں میں کشمیری شال پھیری سے وابستہ افراد 5روز سے اپنے کرایہ کے مکانوں میں محصور ہیں جس کی وجہ سے ان کا کارو باربھی بری طر ح متا ثر ہوگیاہے ۔بیرونی شہرو ں میں مقیم کشمیری شال پھیری کرنے والے لوگو ں نے کشمیر عظمیٰ کو فون پر بتایا کہ وہ گزشتہ5روز سے اپنے کرایہ کے کمرو ں میںمحصور ہوکر رہ گئے ہیں اور ان کا کارو بار بری طر ح متا ثر ہوا ہے ۔ان کا کہنا ہے کہ ان شہرو ں کے عام لوگو ں اور پولیس نے انہیں یقین دلایا کہ ان کے تحفظ کو یقینی بنایا جائے گا تاہم چند شر پسند عناصر کئی جگہو ں پر انہیں بلا وجہ ہرا ساں کر رہے ہیں ۔ان شال پھیری کرنے والے لوگو ں کا مزید کہنا ہے کہ وہ نومبر کے مہینے میں بیرون ریاستو ں میں آکر شال پھیری کر کے اپناروز رو ٹی کماتے ہیں اور یہا ں لاکھو ں روپیہ کے شال کمبل ادھار چھو ڑ دیتے ہیں ۔ان کا کہنا ہے وہ ادھار چھو ڑے ہوئے روپیہ جمع کر نے کے لئے سخت پریشان ہیں ۔ان کشمیری شال پھیری کرنے والے لوگو ں نے بتا یا کہ انہو ں نے اپنی شکایات نزدیکی پولیس تھانو ں میں درج کی اور پولیس نے انہیں یقین دلایا کہ آپ بغیر پریشانی اپنا کام کاج جاری رکھیں اور اگر کسی بھی جگہ آپ کو ہراسا ں کیا گیا تو فوری طور پولیس سے رابطہ کریں ۔اس دوارن ہماچل پردیس کے کئی شہرو ں میں بھی کشمیری شال پھری کر نے والے افراد کو ہرا سا ں کیا جارہا ہے ۔ہماچل میں مقیم شال پھیری کرنے والو ں نے بتا یا کہ جلوس کے دوران انہیں زبردستی پکڑ کر اپنے ساتھ لیکر جلوس میں نعرے بازی کر نے پر مجبور کیا جاتا ہے انہیں اپنا کام کر نے سے روکتے ہیں ۔ادھر کئی طلبہ جو بیرون ریاستو ں میں تعلیم حاصل کر نے کی غرض سے گئے ہیں کا کہنا ہے کہ اب یہا ں کے ہوٹلو ںکے علاوہ دیگر دکانو ں میں بھی کشمیریو ں کو چائے پینے کی اجازت تک نہیں دی جاتی ہے ۔انہو ں نے گور نر انتظامیہ سے مدا خلت کی اپیل کی ہے تاکہ وہ اپنا کارو بار جاری رکھ سکے۔