بیتاڑ نالہ پل خستہ حالی کا شکار، مقامی لوگوں نے مرمت کا مطالبہ کیا

 پونچھ//اجوٹ، گلپور ،دیگوار،کھڑی، کرماڑہ اور دیگر سرحدی علاقوں کو پونچھ سے جوڑنے والا واحد مادر مہربان بیتاڑ نالہ پل عرصہ دراز سے خستہ حالی کا شکار ہے جس کی مرمت کے لئے لوگ بار بار اپیل کر رہے ہیں لیکن انتظامیہ اس طرف کوئی خاص توجہ نہیں دے رہی ہے ۔اس سلسلہ میں پونچھ کے سماجی و سیاسی لیڈران نے تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ ضلع ہیڈ کوارٹر پونچھ سے تقریباً دس پنچایتوں کو جوڑنے والے بیتاڑ نالہ پل کی حالت خستہ ہے جس کی وجہ سے لوگوں کو کافی پریشانیوں کا سامنا ہے۔انھوں نے کہا ہے کہ انتظامیہ اس معاملے میں محتاط نظر نہیں آرہی ہے اور لوگوں کو پریشانی کا سامنا ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ اس پل کی حالت بہت خراب ہے اور انتظامیہ کو اس کا کوئی درد نہیں ہے۔ اگرچہ اس پل کے فٹ پاتھ کی بحالی کا کام شروع کیا گیا ہے لیکن یہ پل بلیک ٹاپنگ کا انتظار کر رہا ہے۔ سابق جنرل سیکر یٹری بار ایسوسی ایشن پونچھ ایڈووکیٹ افتخار بزمی، سنیئر لیڈڑ پی ڈی پی پونچھ جاوید ریشی، ایڈووکیٹ سنجے رائنا اور بہت سے دوسرے لوگوں نے ضلع انتظامیہ پونچھ سے اس پل کی مرمت کرنے کی درخواست کی ہے جو کئی سرحدی علاقوں کو پونچھ شہر سے ملا تا ہے۔ علاقے کے مقامی لوگوں نے بھی ایل جی انتظامیہ پر زور دیا ہے کہ وہ ضلع انتظامیہ کو اس پل کی جلد بلیک ٹاپنگ کی ہدایت کریں۔