بہت بڑی تبدیلی کی شروعات | 4000 سے زیادہ خواتین بغیر محرم حج پر گئیں: وزیر اعظم

عظمیٰ نیوز سروس

نئی دہلی //وزیر اعظم نریندر مودی نے اتوار کو کہا کہ اس سال ہندوستان کی مسلم خواتین کیلئے حج کا سفر خاص تھا، کیونکہ ایسی 4000 سے زیادہ خواتین محرم (مرد سرپرست)کے بغیر سالانہ حج پر گئیں۔وہ اپنی ماہانہ ریڈیو نشریات ‘من کی بات’ کی 103ویں قسط کے دوران قوم سے خطاب کر رہے ہیں۔ مودی نے ہندوستان کی مسلم خواتین کے اپنے مرد والدین یا سرپرستوں کے بغیر حج کو ایک ‘بڑی تبدیلی’ قرار دیا۔ انہوں نے کہا کہ انہیں مسلم خواتین کی جانب سے متعدد خطوط موصول ہوئے ہیں جن میں اس سال حج کے حوالے سے اپنے تجربات بیان کیے گئے ہیں۔

انہوں نے کہا”مجھے بہت سارے خط موصول ہوئے ، جس سے مجھے بہت خوشی ہوئی، یہ خطوط مسلم خواتین نے لکھے ہیں، جو حال ہی میں حج سے واپس آئی ہیں، اس سال ان کا سفر بہت خاص تھا، بہت سے طریقوں سے،یہ وہ خواتین ہیں، جنہوں نے اپنے حج کے مناسک کسی مرد ساتھی یا محرم کے ساتھ بغیر ادا کیے۔ اور، ایسے عازمین کی تعداد 50 یا 100 نہیں بلکہ 4000 سے زیادہ تھی، اوریہ ایک بہت بڑی تبدیلی کی نشاندہی کرتا ہے”۔پی ایم مودی نے اس سال مسلم خواتین کے لیے منفرد حج کے تجربے کے لیے سعودی عرب کی حکومت کا شکریہ بھی ادا کیا۔انہوں نے کہا”اس سے قبل، مسلمان خواتین کو محرم کے بغیر مناسک حج ادا کرنے کی اجازت نہیں تھی۔ ‘من کی بات’ کے ذریعے، میں اسے ممکن بنانے پر سعودی عرب کی حکومت کا تہہ دل سے شکریہ ادا کرنا چاہوں گی، جو مرد ساتھیوں کے بغیر حج پر گئے تھے‘‘۔ایک سرکاری بیان کے مطابق، اس سال ہندوستان سے 4,314 مسلم خواتین نے مناسک حج ادا کیے۔اکتوبر 2022 میں، سعودی عرب کی حکومت نے اعلان کیا کہ(محرم)، ایک مرد کے خونی رشتہ دار جس کے ساتھ شادی کی اجازت نہیں ہے، کو اب دنیا کے کسی بھی حصے سے کسی خاتون حجاج کے ساتھ آنے کی ضرورت نہیں ہوگی۔ہر سال دنیا بھر میں لاکھوں مسلمان مکہ کی مقدس زیارت پر جاتے ہیں۔