’’بہترنظام حکومت کشمیراعلامیہ‘‘

سری نگر//مرکزی ایڈیشنل سیکرٹری محکمہ اِنتظامی اصلاحات و عوامی شکایات( ڈی اے آر پی جی ) ، وزارتِ پرسنل وی سی نواس نے ’’ بہتر نظامِ حکومت کشمیر اعلامیہ ‘‘کے تحت فیصلوں پر پیش رفت کا جائزہ لینے کے لئے بذریعہ ویڈیو کانفرنسنگ میٹنگ کی صدارت کی۔ جموںوکشمیریوٹی میں بہتر حکمرانی کے طریقوں کے نقش پر دو روزہ علاقائی کانفرنس کے پس منظر میں حال ہی میں کشمیر اعلامیہ قرار داد منظور کی گئی۔ میٹنگ میں ڈائریکٹر جنرل آئی ایم پی آر ڈی سوربھ بھگت ، سیکرٹری خزانہ ہماچل پردیش ، ڈی اے آر پی جی ، سی جی جی ، ڈائریکٹر اِکنامکس اینڈ سٹیٹسکس، مختلف اَضلاع کے ڈپٹی کمشنران ، سیکرٹری عوامی شکایات ، سینٹرل یونیورسٹی اور یونیورسٹی آف کشمیرکے پروفیسروں ، ڈائریکٹر ٹریننگ آئی ایم پی اے آر ڈی ، ریجنل ڈائریکٹر ای اینڈ ایس کے ساتھ ڈی ایس ای اور اور سی پی او کے نے شرکت کی۔دورانِ میٹنگ یہ خواہش کی گئی کہ ڈسٹرکٹ گورننس اِنڈکس کی ترقی کے لئے ایک عملی ورکنگ گروپ جس میں آئی ایم پی اے آر ڈی ،ای اینڈ ایس ڈیپارٹمنٹ ،این سی جی جی کے نمائندے ہوں ،محکمہ اِکنامکس اینڈ سٹیٹسٹکس کے گڈ گورننس اِنڈکس اور ہماچل پردیش کے ضلعی گورننس اِنڈکس کے بارے میں شیئرکردہ اعداد و شمار کی دستیابی کے مطالعے کے لئے دو سے تین ماہرین تشکیل دئیے جائیں ۔میٹنگ میں یہ بھی فیصلہ لیا گیا کہ ایک سے دو ہفتوں کی مدت کے تین کپسٹی بلڈنگ پروگرام منعقد ہوں گے جس میں سمارٹ پولیسنگ ، سافٹ ہنر ، تعلیم ، صحت اور مالی ضروریات جیسے جی ایف آر ، پی ایف ایم ایس ، جے اِی ایم کے جے ٹی کے اَفسران کے لئے قومی مرکز کے زیر اہتمام اِنعقاد کیا جائے گا۔ اِس بات پر بھی اِتفاق کیا گیا کہ جموںوکشمیر کی کامیابی کی چند کہانیاں سینٹر فار انوویشن پالیسی اینڈ گورننس ( سی آئی پی جی ) کے ذریعے کیس سٹیڈیز بطور دستاویز کی جائیں گی۔