بھارت چوتھی بار انڈر19ورلڈ کپ پر قابض

ماونٹ مانگنوئی//منجوت کالرا (101ناٹ آوٹ ) اور ہاونک دیسائی (47ناٹ آوٹ) کی فاتحانہ اننگز کی بددولت ہندستانی کرکٹ ٹیم نے یہاں سنیچر کو آسٹریلیا کو آٹھ وکٹ سے شکست دیکر چوتھی مرتبہ آئی سی سی انڈر۔19کرکٹ ورلڈ کپ جیت لیا۔ ہندستان کا یہ چوتھا انڈر۔19ورلڈ کپ ہے ۔ اس سے پہلے ہندستان اور آسٹریلیا دونوں ہی ٹیموں نے تین تین مرتبہ یہ آئی سی سی کا یہ خطاب اپنے نام کیا تھا۔ہندستان نے اس سے پہلے 2000، 2008اور 2012میں اس خطاب پر قبضہ کیا ہے اور اب چوتھی باروہ فاتح بننے کے ساتھ ٹورنامنٹ کی سب سے کامیاب ٹیم بھی بن گئی ہے ۔ میچ میں آسٹریلیا نے ٹاس جیت کر پہلے بلے بازی کرنے کا فیصلہ کیا اور 47.2اوور میں اس کی پوری ٹیم 216رن پر آل آوٹ ہوگئی جس کے جواب میں ہندستان نے 67گیند باقی رہتے 38.5اوور میں صرف دو وکٹ پر 220رن بناکر خطاب پر قبضہ کرلیا۔ اسی کے ساتھ کوچ راہل دراوڑ کی کوچنگ اور پرتھوی شاہ کی کپتانی والی نوجوان ٹیم انڈیا نے ٹورنامنٹ میں کوئی میچ نہ ہار نے کا سلسلہ بھی برقرار رکھا۔ خطاب کی مضبوط دعویدار مانی جا رہی اور ٹورنامنٹ میں پہلے ہی میچ میں آسٹریلیا کو 100 رنز سے شکست دینے والی ہندوستانی ٹیم نے فائنل میں بھی اپنی لاجواب اور یکطرفہ کارکردگی کا مظاہرہ دکھایا۔آسٹریلیا سے ملے 217 رن کے ہدف کا تعاقب کرتے ہوئے اوپنر اور کپتان پرتھوی اور منجوت نے پہلے وکٹ کے لئے 71 رن کی اہم شراکت کر ٹیم کو اچھی شروعات دلائی۔ پرتھوی اگرچہ اس بار بڑی اننگز نہیں کھیل سکے اور پہلے بلے باز کے طور پر آؤٹ ہو گئے ۔انہوں نے 41 گیندوں کی اننگز میں چار چوکے لگا کر 29 رن بنائے ۔وہیں ٹیم کے ٹاپ اسکورر شبھم گل بھی 31 رن پر آؤٹ ہو گئے ۔لیکن ایک اینڈ سنبھالکر کھیل رہے منجوت کی بدولت ہندستان نے میچ سے اپنا کنٹرول نہیں کھویا ۔ آسٹریلیا کے پرم اپل نے شبھم کو بولڈ کیا اور 22 ویں اوور کی دوسری گیند پر 131 کے اسکور پر ہندستان نے دوسرا وکٹ گنوا دیا۔ شبھم نے 30 گیندوں میں چار چوکے لگا کر 31 رن بنائے ۔اس کے بعد منجوت اور وکٹ کیپر بلے باز ھاروک نے تیسرے وکٹ کے لئے 89 رن کی ناٹ آؤٹ ساجھے داری کرتے ہوئے ہندستان کو جیت کی منزل تک پہنچایا اور میدان سے ناٹ آؤٹ بھی لوٹے ۔  منجوت نے 102 گیندوں کی اننگز میں آٹھ چوکے اور تین چھکے لگا کر ناٹ آؤٹ 101 رن بنائے اور آسٹریلیا کے خلاف ہی ٹورنامنٹ میں اپنی دوسری بڑی اننگز کھیلی۔یہ ان کی عالمی کپ میں پہلی سنچری ہے جو ہندستان کے لئے عالمی فاتح کارکردگی بھی رہی جس کی بدولت وہ فائنل میں مین آف دی میچ منتخب کئے گئے ۔ھاروک نے 61 گیندوں میں پانچ چوکے لگا کر ناٹ آؤٹ 47 رنز کی مفید اننگز کھیلی۔ آسٹریلوی گیند بازوں میں ول سدرلینڈ کو 6.5 اوور میں 36 رن اور اپل کو 10 اوور میں 38 رن پر ایک ایک وکٹ ہاتھ لگا۔انگلینڈ کے خلاف 35 رن پر آٹھ وکٹ لے کر سرخیوں میں آئے لائیڈ پوپ اس بار اپنی ٹیم کے سب سے مہنگے بولر ثابت ہوئے اور پانچ اوور میں انہوں نے 42 رنز لٹا دیئے۔ اس سے پہلے آسٹریلیا ئی اننگز کی شروعات خاص نہیں رہی اور ہندستانی گیند بازوں نے آغاز سے ہی اپنا جارحانہ کارکردگی جاری رکھی۔ جوناتھن مرلو نے مشکل حالات میں 76 رن کی نصف سنچری اننگز سے ٹیم کو 200 کے پار لڑنے کے قابل پوزیشن میں پہنچایا۔ان کے علاوہ اپل کی 34 رنز کی اننگز دوسری بڑی اننگز رہی۔ یواین آئی