بھاجپا نے ڈوگرا ریاست کوختم کر لوگوں کی توہین کی:رمن بھلہ

 عظمیٰ نیوز سروس

. جموں//جموں لوک سبھا کے لئے آئی این سی امیدوار اور جے کے پی سی سی کے ورکنگ صدر رمن بھلہ نے کہا کہ بی جے پی حکومت نے تاریخی ڈوگرہ ریاست کو گھٹا کر لوگوں کی توہین کی ہے اور کہا ہے کہ ریاست کا درجہ ہمارا حق ہے اور ہم اسے سپریم کورٹ کے احکامات کے پیش نظر حاصل کریں گے۔ریاسی کے لیٹار، پونی، کالاکوٹ سندربنی کے ٹریاتھ اور مارچولا میں بڑی تعداد میں ریلیوں سے خطاب کرتے ہوئے، رمن بھلہ نے تاریخی ڈوگرہ ریاست کو گھٹا کر لوگوں کے حقوق اور ڈوگروں کی شناخت چھیننے اور لوگوں کو اسمبلی انتخابات سے محروم کرنے پر مودی حکومت پر تنقید کی۔انہوں نے کہا کہ حکومت کو سپریم کورٹ کی ہدایت کے مطابق ریاست کو فوری طور پر بحال کرنا چاہیے تھا لیکن بغیر کسی جواز کے اس میں تاخیر کی جا رہی ہے اور ساتھ ہی انتخابات میں شکست کے خوف سے اسمبلی انتخابات کے انعقاد میں بھی تاخیر کی جا رہی ہے۔انہوں نے کہا کہ بی جے پی نے لوگوں کو روزی روٹی سے محروم کیا، کسانوں کی زمینیں چھین لی، نوجوانوں کی زمینی نوکریوں کے حقوق چھین لئے جبکہ موجودہ حکومت کے دور میں مہنگائی عروج پر ہے اور بے روزگاری 45 سال کے تمام ریکارڈ عبور کر چکی ہے۔بھلہ نے کہا کہ مودی حکومت نے اگنیور اسکیم متعارف کروا کر نوجوانوں کا مستقبل تباہ کر دیا ہے اور کانگریس نے اسے منسوخ کرنے اور باقاعدہ بھرتی کرنے کے علاوہ فی تعلیم یافتہ نوجوان کو ایک لاکھ، غریب خواتین کو ایک لاکھ اور آنگن واڑی، آشا، مڈ ڈے کی اجرت دوگنی کرنے کا وعدہ کیا ہے۔