بھاجپا لیڈر بھائی سمیت ہلاک

 کشتواڑ// کشتواڑ میں نا معلوم بندوق برداروں نے بی جے پی کے ریاستی سیکریٹری اور اسکے بھائی کو گولیاں مار کر ہلاک کردیا۔اس واقعہ کے بعد کشتواڑ میں صورتحال کشیدہ ہوئی اور مشتعل لوگوں نے ایس ایس پی اور ایس ایچ او پر حملہ کیا جس کے باعث دونوں کو چوٹیں آئیں۔ انتظامیہ نے کشتواڑ  اور اسکے مضافاتی علاقوںمیں غیر معینہ مدت تک کیلئے کرفیو نافذ کر کے انٹر نیٹ سروس بند کردی ہے۔معلوم ہوا ہے کہ بھاجپا کے ریاستی سیکریٹری انیل پریہار اپنے بڑے بھائی اجیت پریہار کے ہمراہ تپال محلہ میں سٹیشنری کی دکان بند کر کے رات کے 9بجکر 10منٹ پر اپنے گھر واقع پریہار محلہ جارہے تھے۔ ابھی دونوں نے ایک ساتھ کچھ فاصلہ ہی طے کیا تھا کہ ویٹر نری اسپتال کے نزدیک تاک میں بیٹھے نا معلوم بندوق برداروں نے دونوں پر اندھا دھند فائرنگ کی جس کے نتیجے میں وہ شدید زخمی ہوئے اور اسپتال لیجاتے ہوئے دم توڑ بیٹھے۔واقعہ کے فوراً بعد علاقے میں لوگ گھروں سے باہر آئے اور اسپتال پہنچ گئے، جہاں انہوں نے پولیس اور انتظامیہ کیخلاف نعرے بازی شروع کی۔یہاں فوری طور پر ایس ایس پی کشتواڑ اور ایس ایچ او پہنچ گئے لیکن مظاہرین نے انہیں گھیر لیا اور ان پر حملہ کردیا۔بتایا جاتا ہے کہ پولیس کے دونوں آفیسر زخمی ہوئے جنہیں اسپتال منتقل کردیا گیا۔صورتحال انتہائی کشیدہ دیکھ کر پولیس اور نیم فوجی دستوں کی بڑی تعداد قصبے میں تعینات کردی گئی اور یہاں سختی کیساتھ کرفیو نافذ کر کے انٹر نیٹ سروس بند کردی گئی۔کشتواڑ میں کشیدہ صورتحال دیکھ کر فوج کو الرٹ کردیا گیا ہے اور مرکزی وزیر مملکت جتیندر سنگھ بھی کشتواڑ پہنچ گئے ہیں۔معلوم ہوا ہے کہ انیل پریہار نے 2008میں کشتواڑ سے پینتھرس پارٹی کی ٹکٹ پر الیکشن لڑا تھا اور چناو ہار گئے تھے۔ اسکے بعد وہ بھاجپا میں شامل ہوئے۔اسکا بڑا بھائی اجیت پریہار سٹیٹ فاریسٹ کارپوریشن کا ملازم تھا۔