بھاجپا حکومت کسان مخالف: اجے سڈھوترہ

جموں//بی جے پی حکومت کو کسان مخالف قرار دیتے ہوئے سابق وزیر اجے سڈھوترہ نے آج کہا کہ مرکز کی پالیسیوں کی وجہ سے کسان طبقہ پریشانیوں کا شکا رہو کر رہ گیا ہے ۔ نیشنل کانفرنس سینئر لیڈر نے حالیہ بارشوں اور بالخصوص11اکتوبر کو آئی آندھی میں ہوئے فصلوں کے نقصانات کا جائزہ لینے کے لئے متعدد دیہات جس میں سم، مکوال، ہری پور، سنجانا۔ الورا، پرمبلی، بخشی دے کوٹے، کیمپ ، مرار پور، ٹکو ٹیرا، کارول، ملکے چک، ہری پور، بھورے چک، سردارے چک، لکشمن پورہ، توپ، جوالا پور، کلیاں و کلیاں منہاساں کا دورہ کیا اور وہاں کے کسانوں کے ساتھ تبادلہ خیال کیا۔ اس موقعہ پر کسانوں نے انہیں بتایا کہ ابھی تک حکومت کی طرف سے کوئی بھی ان کے نقصانات کا جائزہ لینے کے لئے نہیں آیا ہے ، انہوں نے کہا کہ کسان طبقہ بری طرح سے پریشانیوں کا شکا ر ہے کیوں کہ ان کے پورے سال کی محنت ضائع ہونے کو ہے ۔ کراپس انشورنس اسکیم کو ایک ڈھکوسلا قرار دیتے ہوئے انہوں نے کہا کہ کسانوں کی پوری فصل تباہ ہو کر رہ گئی ہے لیکن بیمہ کی ادائیگی کے لئے کوئی قدم نہیں اٹھایا جارہا ہے ۔ یہاں تک کہ محکمہ مال کے اہلکار بھی ان کی مشکلات کا پتہ لگانے کے لئے نہیں آئے ہیں۔ سڈھوترہ نے گورنر انتظامیہ سے مانگ کی ہے کہ وہ کسانوں کو فوری طور پر معائوضہ ادا کرنے کے لئے قدم اٹھائیں انہوں نے کہا کہ پورے ملک کے لئے اناج پیدا کرنے والے کسانوں کی بری حالت اور وہ جابجا خود کشی کر رہے ہیں جس کے لئے بی جے پی کی غلط پالیسیاں ذمہ دار ہیں۔