بھاجپارہنماکے متنازعہ بیان پرسیاسی رہنمابرہم

سری نگر//یواین آئی// بھاجپا رہنما وکرم سنگھ رندھاوا کے متنازعہ بیان کی پی ڈی پی صدر اور سابق وزیر اعلیٰ محبوبہ مفتی اورانجمن شرعی شعیان کے صدرآغاحسن  نے مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ جموں وکشمیر کے طلبا کو جیتنے والی ٹیم کے لئے تالیاں بجانے کے الزام میں گرفتار کیا جا رہا ہے لیکن کشمیریوں کی نسل کشی کا مطالبہ کرنے والے بی جے پی لیڈر کے خلاف کوئی کارروائی نہیں کی جا رہی ہے۔بتادیں کہ بی جے پی لیڈر وکرم سنگھ رندھاوا کا ایک ویڈیو سوشل میڈیا پر وائرل ہوا ہے جس میں انہیں ’ہم مطالبہ کرتے ہیں کہ ان (کشمیری طلبا) کی ڈگریاں اور ان کی شہریت کو منسوخ کیا جانا چاہئے اور ان کی کھال ادھیڑ دی جانی چاہئے،‘ کہتے ہوئے سنا جا سکتا ہے۔محبوبہ مفتی نے اس متنازع بیان کے رد عمل میں پیر کے روز اپنے ایک ٹویٹ میں کہا،’ ’کشمیریوں کی نسل کشی اور ان کی کھال ادھیڑنے کا مطالبہ کرنے والے بی جے پی کے سابق رکن اسمبلی کے خلاف کوئی کارروائی نہیں کی گئی لیکن جموں وکشمیر کے طلبا کے خلاف جیتنے والی ٹیم کے لئے تالیاں بجانے پر بغاوت کا مقدمہ عائد کر دیا جاتا ہے، بھارت یقیناً جمہوریتوں کی ماں ہے‘‘۔انجمن شرعی شیعان کے صدر آغا سید حسن موسوی نے بی جے پی لیڈر وکرم سنگھ رندھا وا کے متنازع بیان کی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے حکومت سے اپیل کی ہے کہ وہ ایسے شر پسند عناصر کی لگام کس لے۔انہوں نے کہا کہ بی جے پی لیڈر کی باتیں امن اور بھائی چارے کے ماحول کے لئے ضرر رساں ہیں اور ایک مذہب معاشرے میں ایسے تاثرات کی کوئی جگہ نہیں ہے۔موصوف نے یہ باتیں پیر کے روز اپنے ایک ٹویٹ میں کہیں۔ان کا ٹویٹ میں کہنا تھا،’ ’ہم جموں وکشمیر کے متعلق بی جے پی لیڈر وکرم سنگھ رندھا وا کی باتوں کی سخت مذمت کرتے ہیں اور انہیں امن و بھائی چارے کے ماحول کے لئے ضرر رساں سمجھتے ہیں‘‘۔انہوں نے اپنے ٹویٹ میں مزید کہا،’ ’ہم حکومت کو خبر دار کرنا چاہتے ہیں کہ وہ ایسے عناصر کی لگام کس لی جائے اس سے پہلے کہ دیر ہوجائے، اس قسم کی غیر مہذبانہ زبان اور خیالات کو ایک مہذب معاشرے میں کوئی جگہ نہیں ہے‘‘۔دریں اثنا حق انصاف کونسل کے چیئر مین ایڈوکیٹ سید ذیشان نے یہاں پریس کالونی میں آکر موصوف بی جے پی لیڈر کے خلاف احتجاج درج کرکے ان کے خلاف مقدمہ درج کرنے کا مطالبہ کیا۔انہوں نے میڈیا کو بتایا کہ بی جے پی کے ایک بڑے لیڈر وکرم سنگھ رندھا وا کا بیان انتہائی اہانت آمیز ہے جس کی ہم مذمت کرتے ہیں۔ان کا کہنا تھا،’ ’ہم جموں و کشمیر پولیس کے سربراہ دلباغ سنگھ سے گذارش کرتے ہیں کہ موصوف لیڈر کے خلاف قانونی کارروائی کریں‘‘۔بتادیں کہ بی جے پی لیڈر وکرم سنگھ رندھاوا کا ایک ویڈیو سوشل میڈیا پر وائرل ہوا ہے جس میں انہیں ’ہم مطالبہ کرتے ہیں کہ ان (کشمیری طلبا) کی ڈگریاں اور ان کی شہریت کو منسوخ کیا جانا چاہئے اور ان کی کھال ادھیڑ دی جانی چاہئے‘ کہتے ہوئے سنا جا سکتا ہے۔