بچوں میں ہنر پیدا کرنے کے لئے پری سکول ناگزیر طلباء کی تعلیمی تقدیر کی تشکیل میں اساتذہ اور والدین کی ہم آہنگی ا ہم :بھلہ

 عظمیٰ نیوز سروس

جموں //ابتدائی عمر میں بچوں کو مختلف مہارتیں فراہم کرنے کے لئے پری اسکول سہولیات کے اقدام کی تعریف کرتے ہوئے جموں وکشمیر پردیش کانگریس کے ورکنگ صدر رمن بھلہ نے کہا کہ یہ بچوںکی مضبوط بنیاد رکھنے کے لئے بہت اہمیت رکھتے ہیں۔ ٹیچر آڈیٹوریم گاندھی نگر جموں میں نیو جرسی پری اسکول کنجوانی کے دوسرے سالانہ تقریب کے دوران کانگریس لیڈر نے بچوں کی مضبوط تعلیمی بنیاد کیلئے اساتذہ اور والدین کے ہم آہنگی کی اہمیت کو اجاگر کرتے ہوئے کہا کہ دونوں کے درمیان باہمی تعلقات کو سیکھنے کے عمل کا ایک اہم جزو بنانا چاہیے۔

 

انہوں نے اس امید کا اظہار کیا کہ ماہرین تعلیم کے ساتھ ساتھ اسکول بھی غیر نصابی سرگرمیوں، کھیلوں اور شخصیت کی نشوونما پر توجہ دیں گے، جو طلباء کی مجموعی ترقی کے اہم اجزاء ہیں۔بھلہ نے کہا کہ نوجوان ذہنوں کو تیار کرنا ایک اہم چیلنج ہے۔انہوںنے تعلیم کے میدان میں نجی شعبے کے بڑھتے ہوئے کردار کی تعریف کی۔ انہوں نے کہا کہ اسکولوں کے درمیان صحت مند مقابلہ بالآخر نوجوانوں کو فائدہ دے گا اور انہیں جدید دور کے چیلنجوں کا اعتماد کے ساتھ مقابلہ کرنے کے لئے بہتر مقام حاصل ہوگا۔ اگرچہ والدین اپنے بچوں کے مستقبل کو سنوارنے میں معاون کردار ادا کر سکتے ہیں، لیکن یہ دراصل ایک استاد ہے جسے ایک رہنما، فلسفی اور رول ماڈل کا کردار ادا کرنا ہوتا ہے۔بھلہ نے اسکول کی ترقی پر خوشی کا اظہار کیا اور اس اعتماد کا اظہار کیا کہ یہ مشنری جذبے کے ساتھ اپنا کردار ادا کرے گا۔ انہوں نے طلباء کی طرف سے مختلف شعبوں میں حاصل کئے گئے امتیاز کو سراہتے ہوئے امید ظاہر کی کہ وہ آنے والے سالوں میں بھی بہترین کارکردگی کو برقرار رکھیں گے۔ سالانہ دن کی تقریب کو طلباء اور ان کے والدین کے لئے ایک خاص موقع قرار دیتے ہوئے بھلہ نے امید ظاہر کی کہ یہ تقریبات نوجوانوں کیلئے سرگرمیوں کے مختلف شعبوں میں اپنی صلاحیتوں کا مظاہرہ کرنے کے لئے فائدہ مند ثابت ہوں گی۔ انہوں نے مختلف سرگرمیوں میں چھوٹے بچوں کی شرکت کا حوالہ دیا اور کہا کہ مجموعی ترقی اور شخصیت کی نشوونما کے لئے غیر نصابی سرگرمیاں ناگزیر ہیں۔ انہوں نے طلباء کو مشورہ دیا کہ وہ ماہرین تعلیم کے ساتھ ساتھ کھیلوں پر بھی توجہ دیں کیونکہ یہ ان کی صلاحیتوں کو نکھارنے کے لئے ضروری ہے۔انہوں نے کہا کہ تعلیمی اور غیر نصابی سرگرمیوں کے شعبوں میں نوجوان طلباء کیلئے آسمان ایک حد ہے، انہوں نے مزید کہا کہ یہ اساتذہ، طلباء اور والدین کے درمیان بہتر باہمی تعلق کے ذریعے حاصل کیا جا سکتا ہے۔ بنیادی اسکولی سطح پر، جو سیکھنے کے عمل کا ایک اہم جزو ہے۔انہوں نے والدین پر زور دیا کہ وہ اساتذہ کے ساتھ متواتر بات چیت کریں تاکہ وہ اپنے بچوں کی نشوونما پر باقاعدگی سے نظر رکھیں۔ انہوں نے امید ظاہر کی کہ انتظامیہ بہترین تعلیمی معیار کو برقرار رکھے گی اور تیزی سے بدلتی ہوئی دنیا کی ضروریات کے مطابق بچوں کی تقدیر کو تشکیل دے گی۔ انہوں نے انتظامیہ سے کہا کہ وہ اپنی سماجی ذمہ داری کے تحت معاشرے کے نچلے طبقے سے آنے والے طلباء کا زیادہ خیال رکھیں۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔