بٹگراں اوڑی سڑک 15دنوں سے بند | برف ہٹانے کا عوام کا مطالبہ

  بارہمولہ// سرحدی قصبہ اوڑی کا بٹگراں سڑک رابطہ گزشتہ پندرہ روز سے بند پڑا ہوا ہے جس کے نتیجے میں مقامی آبادی کو سخت مشکلات سامنا کرنا پڑ رہا ہے ۔  ادھر تازہ برفباری کے بعد اوڑی کے کئی دیگر بالائی علاقے تحصیل ہیڈ کوارٹر سے منقطع ہے۔ متاثرہ دیہاتوں میں چوکس گوالتا، پنج ناگ نوا، گوہالن بٹگراں ، دانہ موٹھل ، اپر گرکوٹ، اپر نمبلہ زمور پٹن، شکر کلاری سے بند محلہ، میان شامل ہیں ۔شدید برف باری کے بعد بجلی نظام بھی بری طرح متاثر ہوا ہے جس کے باعث مقامی لوگوں کو بجلی کے بحران کا بھی سامنا ہے۔ مقامی لوگوں کا کہنا تھا کہ برف باری کے بعد انہیں کافی مشکلات کا سامنا ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ سب ڈویڑن اوڑی کے بالائی علاقوں میں شدید برف باری نے زندگی کو درہم برہم کر دیا ہے۔ ادھر بٹگراں کے لوگوں نے بتایا کہ اگر چہ انہو ں نے گزشتہ پندرہ روز سے پی ایم جی ایس وائی محکمہ اور  اوڑی انتظامیہ سے برف سے ڈھکی سڑک کو صاف کرنے کی کئی بار درخواست کی لیکن ان سڑکوں کو صاف کرنے میں وہ پوری ناکام رہے اور علاقے کے لوگوں کو شدید پریشانی کا سامنا ہے۔ گوہالن کے مقامی لوگوں نے بتایا کہ پی ایم جی ایس وائی نے ہمارے علاقے کی رابطہ سڑک سے ابھی تک برف نہیں ہٹائی ہے جس کی وجہ سے ہائی اسکول اور اسپتال ابھی تک بند پڑے ہیں۔ انہوں نے مذید بتایا کہ  لوگوں کو یہاں سے اوڑی بازار تک پیدل سفر طے کرنا پڑ رہا ہے اور  اگر علاقے میںکوئی بیمار ہوجاتا ہے تو ہمیں اُسے کندھوں یا چارپائی  پر اُٹھا کر اسپتال پہنچانا پڑ تا ہے۔ لوگوں نے گورنر انتظامیہ، ڈی سی بارہمولہ اور ایس ڈی ایم اوڑی سے مطالبہ کیا ہے  وہ متعلقہ محکمے کو جنگی بنیادوں پر سڑکوں کو صاف کرنے کی ہدایت دیں تاکہ متاثرہ دیہات کے لوگوںکو مشکلات نہ کرنا پڑے۔دریں اثنا،  نیشنل کانفرنس کے ضلع  صدر بارہمولہ ، ڈاکٹر سجاد شفیع نے حکام پر زور دیا کہ وہ مہاتما گاندھی ایمپلائمنٹ گارنٹی ایکٹ، (MGNREGA) کے تحت سب ڈویڑن اوڑی کے دور دراز علاقوں سے برف ہٹانا شروع کریں۔ اس کے علاوہ جلد ہی برف صاف کرنے سے کئی ایسے لوگوں کو ملازمت کا موقع ملے گا جو پہلے ہی معاشی بحران کا سامنا کر رہے ہیں۔