بوٹینگو واقعہ بزدلانہ حرکت،تحقیقات کی جائے، مزاحمتی،مین سٹریم ،سماجی اور مذہبی جماعتوں کا شدید ردعمل

سرینگر//نائب وزیر اعلیٰ،پریا سیٹھی،بالی بھگت،پروفیسر امیتابھ مٹو ،کوہلی ،عمران رضا انصاری، پی ڈی پی ، ڈاکٹر کرن سنگھ، اورکانگریس نے حملے کی مذمت کرتے ہوئے اس کارروائی کو بزدلانہ حرکت سے تعبیر کیا ہے۔ نائب وزیر اعلیٰ ڈاکٹر نرمل سنگھ نے اننت ناگ میں امر ناتھ یاتریوں پر کئے گئے حملے کی شدید الفاظ میں مذمت کی ہے ۔ اس حملے میں 7 یاتری مارے گئے جبکہ دیگر کئی زخمی ہو گئے ۔ مارے گئے یاتریوں کے کنبوں کے ساتھ ہمدردی کا اظہار کرتے ہوئے نائب وزیر اعلیٰ نے کہا کہ یہ بزدلانہ حرکت ایسے عناصر کی ہے جو ریاست میں امن کو درہم برہم کرنے اور باہمی رواداری و بھائی چارے کو زک پہنچانے کے درپے ہیں ۔وزیر مملکت برائے تکنیکی تعلیم ، ثقافت ، باغبانی پریاسیٹھی نے اننت ناگ حملے میں زخمی ہوئے یاتریوں کی سکمز صورہ جا کر عیادت دی۔وزیر کے ہمراہ ایم ایل سی سریندر امبار دار بھی تھے۔وزیر نے زخمی ہوئے یاتریوںکے ساتھ تبادلہ خیال کیا اور ان کے تیمارداروں کو یقین دلایا کہ حکومت کی جانب سے انہیں ہر ممکن طبی امداد دستیاب رکھی جائے گی۔امرناتھ یاتریوں پر حملے کو ایک بزدلانہ عمل قرار دیتے ہوئے وزیر نے کہا کہ ہم متاثرین کے ساتھ ہیں۔صحت و طبی تعلیم کے وزیر بالی بھگت نے سکمز صورہ کا دورہ کر کے زخمی ہوئے یاتریوں کی عیادت کی۔ اِس موقعہ پر سکمز کے ڈائریکٹر اے جی آہنگر اور دیگر سینئر ڈاکٹر صاحبان بھی موجود تھے۔ وزیر نے ڈاکٹروں کو تمام زخمی یاتریوں کو خصوصی صحت خدمات فراہم کرنے کی ہدایت دی تاکہ وہ جلد سے جلد صحت یاب ہوسکیں۔ وزیراعلیٰ کے مشیر پروفیسر امیتابھ مٹو نے حملے کی مذمت کرتے ہوئے سوگوار کنبوں کے ساتھ ہمدردی کا اظہارکیا ہے ۔انہوںنے اس کاروائی کو ان عناصر کا کام قرار دیا جو ریاست میں غیر یقینیت کی صورتحال پیدا کرنے پر تلے ہوئے ہیں۔ پشوو بھیڑ پالن اور ماہی پروری کے وزیر عبدالغنی کوہلی نے حملے کی مذمت کرتے کہا ہوئے کہاکہ کوئی بھی مذہب اس طرح کے واقعات کی اجازت نہیں دیتا جس میں معصوم شہریوں کو نشانہ بنایا جائے۔انہوں نے کہا کہ سماج کے مختلف طبقوں کے لوگوں نے اس بیہمانہ حرکت کی سخت الفاظ میں مذمت کی ہے۔پی ڈی پی نے یاتریوں پرحملے کوانسانیت سوزجرم قراردیتے ہوئے واضح کیاہے کہ ایسی بزدلانہ حرکتوں سے کشمیریوں کی پہچان مسخ نہیں کی جاسکتی ہے۔پارٹی کے ضلع صدرسرینگراورممبرقانون سازکونسل محمدخورشیدعالم نے وزیراعلیٰ محبوبہ مفتی کے عزم کی سراہناکرتے ہوئے کہاکہ کشمیریت اورمذہبی رواداری کوداغدارہونے نہیں دیاجائیگا۔ریاستی کانگریس کے صدر غلام احمد میر نے وادی کشمیر میں بگڑتی صورتحال کو تشویشناک قرار دیا ۔اس دوران کا نگریس پارٹی کے ایم ایل سی و ریاستی نائب صدر جی این مونگا کی صدارت میں ایک اعلیٰ سطحی میٹنگ منعقد ہوئی ،جس میں اسلام آباد میں پیش آئے واقعہ کو بد قسمتی سے تعبیر کیا گیا ۔غلام احمد میر نے اسلام آباد میں رونما ہوئے ہلاکت خیز واقعہ کو افسوسنا ک قرار دیتے ہوئے کہا کہ اس طرح کے واقعات کیلئے انسانیت میں کوئی جگہ نہیں ہے ۔کانگریس کے سینئر لیڈر اور سابق مرکزی وزیرپروفیسر سیف الدین سوز نے اس خونین واقع کی مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ پورے کشمیر میں رنج و غم کا ماحول ہے۔انہوں نے کہا کہ حقیقت یہ ہے کہ اس قسم کا تشدّد کشمیر کی ثقافت جس کو عام طور پر کشمیریت سے موسوم کیا جاتا ہے، کے سراسر خلاف ہے اور یہ واقعہ ہر لحاظ سے قابل مذمت ہے۔ پی ڈی ایف سربراہ اور ایم ایل خانصاحب حکیم محمد یٰسین نے رنج و غم کا اظہار کرتے ہوئے لواحقین کے ساتھ تعزیت اور ہمدردی کا اظہار کیا ہے۔انہوں نے کہا کہ بے قصور اور نہتے لوگوں پر حملہ کرنا کشمیری روایات کے خلاف ہی نہیں بلکہ اسلامی تعلیمات کے بالکل خلاف بھی ہے۔ انہوں نے مزیدکہا کہ صرف مذمت کرنے سے حکومت اپنی ذمہ داریوں سے مبرا نہیں ہوسکتی کیونکہ یہ ایک بہت بڑا ٍ شرمناک واقعہ اور تحقیقات طلب ہے ۔پنتھرس پارٹی نے جنتر منتر نئی دہلی پر ایک میٹنگ کی جس میں کئی سیاسی اور سماجی کارکن شامل ہوئے جنہوں نے حملہ کی سخت مذمت کی اور صدر جمہوریہ سے فوری طورپر جمو ں وکشمیر میں مداخلت کرنے کامطالبہ کیا ۔پنتھرس پارٹی کے سرپرست اعلیٰ پروفیسر بھیم سنگھ کی صدارت میں ہوئی اس میٹنگ میں صدر پر زور دیا گیاکہ وہ جموں وکشمیر کے گورنر کو مشورہ دیں کہ وہ وہاں فوری طورپر گورنر راج نافذ کردیں۔گوجربکروال کانفرنس کے جنرل سکریٹری محمد یاسین پسوال نے مذمت کرتے ہوئے کہا کہ لوگوں نے نا مسائد حالات کے باوجود ہمیشہ یاتریوںکی مہمان نوازی کی ہے۔ بی جے پی کے ریاستی سیکریٹری ڈاکٹر علی محمد نے حملے کو کھلی دہشت گردی سے تعبیر کرتے ہوئے حملے میں ملوث لوگوں کو فوری طور پر قانون کے کٹہرے میں کھڑا کر کے سزا دینے کا مطالبہ کیا۔ کانگریس کے سینئر لیڈر ڈاکٹر کرن سنگھ نے کہا ہے کہ کسی بھی طریقے سے امرناتھ یاتریوں پر کئے گئے حملے کوجائز نہیں ٹھرایا جائے گا اور اس واقعے کی بھی جتنی مذمت کی جائے وہ کم ہے۔ ڈاکٹر کرن سنگھ نے کہا کہ یہ کشمیریت کا حصہ نہیں ہے اور کشمیریوں کو بدنام کیا جارہا ہے۔ انہوں نے مطالبہ کیا ہے کہ حملے میں ملوث افراد کی جلد سے شناخت کی جائے تاکہ انہیں سخت سے سخت سزا دی جائے۔ جواہر نگر سرینگر میں بی جے پی کے دفتر پر ریاستی نائب صدر اور کشمیر معاملوں کی انچارج ڈاکٹر درخشا اندربی نے ایک تعزیتی میٹنگ میں امرناتھ یاتریوں پر کئے گئے حملے کی مذمت کی اورکہا’’ہم امرناتھ یاتریوں پر حملے کی سخت الفاظ میں مذمت کرتے ہیں اور دہشت گردی کے خاتمے کا مطالبہ کرتے ہیں‘‘۔انہوں نے کہا کہ بے گناہ لوگوں کو قتل کرنا جائز نہیں ہے اور اس سے کسی بھی مسئلے کا حل نہیں نکلا ہے۔