بورڑ امتحانات سے ایک ہفتہ قبل نصاب مکمل کریں

سرینگر//ناظم تعلیم کشمیر نے چند کوچنگ مراکز اور پرائیویٹ تعلیمی اداروں کے طالب علموں کی شکایات کا سنجیدہ نوٹس لیتے ہوئے پرائیویٹ سکولوں کے منتظمین اور تسلیم شدہ کوچنگ مراکز کے مالکان کی ایک میٹنگ طلب کی ۔ میٹنگ کے دوران ناظم تعلیم کشمیر ڈاکٹر جی این ایتو نے تسلیم شدہ کوچنگ مراکز اور پرائیویٹ سکولوں کے ذمہ داروں سے کہا کہ ضرورت پڑنے پر اضافی کلاسز کا اہتمام کریں اور دسویں ، گیارہویں اوربارہویں جماعت کے بورڑ امتحانات سے ایک ہفتہ قبل نصاب کی صد فیصد تکمیل کو یقینی بنائیں۔ناظم تعلیم نے اس بات پر بھی زور دیا کہ طالب علموں کو تیاری کے لئے امتحان شروع ہونے سے قبل ایک ہفتے کے وقفے کو یقینی بنایا جائے۔انہوں نے متنبہ کیا کہ سیلبس کو مکمل کئے جانے میں کسی بھی کوتاہی سے کام نہ لیا جائے ۔ ڈاکٹر ایتو نے میٹنگ میں موجود شرکاء پر زور دیا کہ وہ سرکاری سکولوں کے طرزپر طالب علموں کی رہنمائی ، ان کی شکایات کا ازالہ کرنے اور اُن کے ذہنی دباؤ کو کم کرنے کے لئے امتحانی کونسلنگ سیشنز کا انعقاد کریں ۔انہوںنے طالب علموں کے معاملات اور اُن کے مسائل کو سنجیدگی سے سننے اور اُن کا ازالہ یقینی بنانے پر زور دیا۔ میٹنگ میں جوائنٹ ڈائریکٹر سکول ایجوکیشن سینٹرل عابد حسین، او ایس ڈی اکیڈمکس میر ثنا اﷲ اور پرائیویٹ سکولوں کے منتظمین کے علاوہ چند تسلیم شدہ کوچنگ مراکز کے ذمہ داران نے شرکت کی۔