بنگال کا واقعہ وفاقی ڈھانچہ کیلئے خطرہ: راج ناتھ

نئی دہلی//مرکزی وزیر داخلہ راج ناتھ سنگھ نے شاردا چٹ فنڈ گھپلہ کی انکوائری کے لئے گئے سی بی آئی ٹیم کے ساتھ کولکاتہ پولیس کے غیر معمولی ٹکراو پر سخت تشویش کا اظہار کرتے ہوئے آج کہا کہ یہ صورت حال ملک کے وفاقی ڈھانچے کے لئے خطرہ ہے جس کے سنگین نتائج ہوسکتے ہیں۔مسٹر سنگھ نے یہاں لوک سبھا میں اس معاملے پر ہنگامے کے دوران کولکاتہ میں کل کے واقعہ پر ایک بیان پڑھا۔ انہوں نے کہا کہ یہ مغربی بنگال میں آئینی نظام کا ٹوٹنا ہوسکتا ہے ۔ مسٹر سنگھ نے وقفہ صفر میں ترنمول کانگریس کے پروفیسر سوگت رائے کے ذریعہ اس معاملے پر وزیر اعلی ممتا بنرجی کے دھرنے کا ذکر کرنے پر نعرے بازی کے درمیان یہ بیان دیا۔انہوں نے کہا کہ کولکاتہ میں سی بی آئی کو قانونی ذمہ داری ادا کرنے سے روکا گیا۔ یہ تاریخ میں غیر معمولی واقعہ ہے ۔ سی بی آئی شاردا گھپلے کی انکوائری کررہی ہے ۔ شاردا گروپ نے لاکھوں غریبوں کی گاڑھی کمائی کے پیسے کوزیادہ ریٹرن دینے کے بہانے سے ہڑپ لیا۔ جب پیسہ واپس نہیں ملا تو ایک مفاد عامہ کی عرضی پر سپریم کورٹ نے شاردا گھپلے کی انکوائری کی ذمہ داری سپریم کورٹ کوسونپی تھی۔ عدالت نے کہا تھاکہ اس معاملے میں کئی سیاسی لیڈروں کے شامل ہونے اور سیاسی محاذ بندی کا امکان ہے ۔وزیر داخلہ نے کہا کہ کل شام پونے چھ بجے سی بی آئی کی ایک ٹیم کولکاتہ پولیس کمشنر کے گھر پر پوچھ گچھ کے لئے پہنچی جسے مغربی بنگال پولیس کے طاقت استعمال کرتے ہوئے روکا اور تھانے لے گئے ۔ انہوں نے کہا کہ سی بی آئی کو مجبوراً یہ قدم اٹھانا پڑا تھا۔ کیوں کہ پولیس کمشنر انکوائری میں تعاون نہیں کررہے تھے ۔ حالات اتنے سنگین ہوگئے کہ سی آر پی ایف کی تعیناتی کرنی پڑی۔ انہوں نے کہا کہ مقامی پولیس اور سی بی آئی میں یہ ٹکراو غیر معمولی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ وہ وفاقی نظام میں ریاست کے حقوق کا احترام کرتے ہیں لیکن وہاں تقریباً آئینی نظم ٹوٹنے جیسے حالات ہوگئے ہیں۔مسٹر سنگھ نے کہا کہ انہوں نے گورنر کیسری ناتھ ترپاٹھی سے بات کی ہے اور گورنر نے چیف سکریٹری اور ڈائریکٹر جنرل پولیس کی میٹنگ طلب کی ہے ۔ خود انہوں نے گورنر سے اس پورے معاملے کی رپورٹ بھیجنے کے لئے کہا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ وہ وزیر اعلی ممتا بنرجی سے اپیل کرتے ہیں کہ وہ جانچ ایجنسیوں کو اپنی قانونی ذمہ داری ادا کرنے کا موقع دیں۔ انہوں نے کہا کہ وہ دیگر تمام ریاستوں سے توقع کرتے ہیں کہ وہ ایسا ضروری ماحول بنائیں جس سے تفتیشی ایجنسیا ں غیر جانبدارانہ طورپر اپنا کام کرسکیں۔یو این آئی